عمران خان لفٹر سے گر کر زخمی ، سر میں معمولی فریکچر ، حالت خطرے ، خود انتخابی مہم سے باہر،جلد صحت یابی کیلئے قائدین اور دنیا کے ہاتھ آسمان کی طرف اٹھ گئے ، 11 مئی کو تقدیر بدلنے کا نظریہ یاد رکھیں :سربراہ تحریکِ انصاف

عمران خان لفٹر سے گر کر زخمی ، سر میں معمولی فریکچر ، حالت خطرے ، خود انتخابی ...

  

لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک) پاکستان تحریک انصاف کے سر براہ عمران خان انتخابی جلسے سے خطاب کیلئے سٹیج پرچڑھتے ہوئے لفٹر سے نیچے گر کر دو محافظوں سمیت زخمی ہوگئے ، ان کے سر، کمر اور ماتھے پر زخم آئے ہیں اور ڈاکٹروں نے بتایا ہے کہ انہیں پندرہ ٹانکے لگے ہیں تاہم وہ مکمل طور پر خطرے سے باہر البتہ انہیں آرام کی ضرورت ہے جس کے بعد ڈاکٹروں نے انہیں آرام کا مشورہ دیدیا ہے اور شائد وہ انتخابی مہم بھی نہیں چلاسکیں گے تاہم انہوں نے قوم سے اپیل کی ہے کہ وہ گ11مئی کو اپنی جنگ سمجھتے ہوئے اپنے بچوں کی جنگ لڑے اور امیدوار کے بجائے تحریکِ انصاف کے منشور و نظریے کو ووٹ دے ۔اس حادثے کی خبر پوری دنیا میں جنگل کی آگ کی طرح پھیل گئی اور ان کے کارکن سسکیاں لیتے ہوئے باہر نکل پڑے ۔ عمران خان گلبرگ کے علاقے غالب مارکیٹ میں جلسہ لفٹر کے ذریعے سٹیج پر جا رہے تھے تو بارہ سے پندرہ فٹ کی بلندی پر وہ اپنا توازن برقرار نہ رکھتے ہوئے دو محافظوں سمیت سر کے بل نیچے گر گئے ۔ عمران خان کے سر میں لفٹر کے گرل لگی اور وہ سر پھٹ گیا جس سے وہ نیم بے ہوشی ہوگئے ۔ اس وقت ایمبولینس نہ ہونے پر کارکنوں نے انہیں قریبی نجی ہسپتال منتقل کرکے ابتدائی طبی امداد دی گئی جس کے بعد ان کی اپنی خواہش پر فوری طور پر شوکت خانم ہسپتال منتقل کردیا گیا جہاں ان کا سی ٹی سکین کیا گیا گیا جس کے مطابق ان کے سر پر کوئی اندرونی چوٹ نہیں آئی ۔ ڈاکٹروں نے بتایا کہ عمران خان کو چوٹیں آئی ہیں تاہم کوئی خطر ناک چوٹ نہیں آئی تاہم انہیں آرام کی ضرورت ہے ۔ ہسپتال میں موجود ان کے قریبی دوست یوسف صلاح الدین کے مطابق زخمی حالت میں عمران خان کلمہ طیبہ کا ورد کرتے رہے اور ہوش میں آنے کے بعد انہوں نے کارکنوں کے ساتھ پوری قوم کا شکریہ بھی ادا کیا ۔ تحریکِ انصاف کے رہنما اسد عمر نے سوشل میڈیا پر خبر دی ہے ان کے سر میں معمولی فریکچر ہوا ہے ۔اس سے پہلے تحریکِ انصاف کے رہنما اعجاز چودھری کے مطابق عمران خان کی حالت خطرے سے باہر ہے جبکہ خاتون رہنما ناز بلوچ نجی ٹی وی سے گفتگو کرتے ہوئے عمران خان کا نام لیکر رو پڑیں ۔ ان کا کہنا تھا کہ ایسے لیڈرصدیوں کے بعد ملتے ہیں ، ہم حواس میں نہیں ہیں ، اور ان کی جلد صحت یابی کیلئے دعا کر رہے ہیں، ہم پوری قوم سے دعا کی اپیل کرتے ہیں ۔ انہوں نے بتایا کہ عمران خان نے ہوش میں آنے کے بعد خود ہی شوکت خانم ہسپتال جانے کیلئے کہا تھا ۔ انہوں نے بتایا کہ عمران کے مکمل طبی معائنے کے بعد فیصلہ کیا جائے گا کہ عمران خان جلسوں سے خطاب جاری رکھیں گے یا نہیں ۔ انہوں نے کارکنوں سے اپیل کی کہ وہ دعا کے ساتھ ساتھ اپنی سیاسی سرگرمیاں جاری رکھیں ۔ انہوں نے کارکنوں سے کہا کہ عمران خان کی سیاسی سرگرمیاں ڈاکتروں کے مشورے سے جاری رکھی جائیں گی لیکن اگر ڈاکٹروں نے آرام کا مشورہ دیا تو اس پر بھی عمل کیا جائے گا ۔ اس حادثے کی اطلاع ملنے پرصدرِ مملکت آصف علی زرداری نگراان وزیراعظم، چیف الیکشن کمشنر اور سیاسی قائیدین نے اس حادثے پر افسواس کا اظہار ر کیا ہے اور اب کی جلد صحت یابی کی دعا کی ہے ۔ عوامی نیشنل پارٹی کے سیہنیٹر شاہی سید نے عمران خان کی جلد صھت یابی کیلئے دعا کی ۔ متحدہ قومی موومنٹ کے سربراہ الطاف حسین نے پوری قوم سے اپیل کی ہے کہ وہ عمران کی جلد صحت یابی کیلئے دعا کرے ۔ انہوں نے عمران خان سے یکجہتی کیلئے سیالکوٹ میں اپنا جلسہ بھی منسوخ کردیا۔مسلم لیگ ن کے قائد میں نوازشریف نے افسوس اور ان کیلئے نیک تمناﺅں کا اظہار کیا ہے ۔انہوں نے عمران خان کی جلد صحت یابی کی دعا کی ہے ۔ میاں نواز شریف کی صاحبزادی مریم نواز نے بھی ان کی جلد صحت یابی کی دعا کی ہے ، مسلم لیگ کے رہنما مشاہد اللہ نے بھی افسوس کا اظہار کرتے ہوئے عمران خان ٰٰٓؓ اور تحریکِ انصاف کے کارکنوں سے یکجہتی اور ہمدردی کا اظہار کیا ہے ۔ انسانی بنیادوں پر ان سے ہمدردی ہے ، ہماری ان سے ذاتی دشمنی نہیں ہے ، ہم ان کی عیادت بھی کریں گے ، اور اس کے علاوہ کوئی انسانی کردار ہوا تو وہ بھی ادا کریں گے ۔ وہ میاں نواز شریف کے دوست بھی ہیں اور کرکٹر کی حیثیت سے مجھے بھی پسند ہیں اور دنیا بھر کی اہم شخصیت ہیں ۔ عمران خان کے ساتھ سٹیج پر سابق ٹیسٹ کرکٹر عبدالقادر بھی موجود تھے جنہوں نے اس حادثے کی تفصیل بیان کی جس دوران ان کی آواز بھر آئی اور پھر ان سے ٹیلی فون کا رابطہ کٹ گیا ۔تحریکِ انساف کے رہنما گلوکار ابرارالحق نے تصدیق کی ہے کہ عمران خان اب ہوش میں ہیں اور ان کی حالت بھی خطرے سے باہر ہے ۔ سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر بھی عمران خان کی جلد صحت یابی کیلئے دعائیں کی جا رہی ہیں ۔

مزید :

لاہور -اہم خبریں -