کاشتکاروں کو دھان کی ممنوعہ اقسام کا ت نہ کرنے کی ہدائت

کاشتکاروں کو دھان کی ممنوعہ اقسام کا ت نہ کرنے کی ہدائت

فیصل آباد(بیورورپورٹ) ماہرین زراعت نے کاشتکاروں کو دھان کی ممنوعہ اقسام 386، سپر فائن ، کشمیرا ، مالٹا ، ہیرو اور سپرا کا شت نہ کرنے کی ہدائت کی ہے اور کہا ہے کہ دھان کے کاشتکار ان اقسام کی کاشت سے گریز کریں کیونکہ ان سے پیدا ہونے والا چاول انتہائی ناقص ہوتا ہے اور ان اقسام کی ملاوٹ کے باعث ملکی و غیر ملکی منڈی میں باسمتی کی قیمت انتہائی کم ہو جاتی ہے جس کی وجہ سے کاشتکاروں کو بھاری مالی نقصان کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے۔سپر باسمتی ، باسمتی 385،باسمتی 370،باسمتی 2000،باسمتی پاک ، باسمتی 198، باسمتی شاہین ، کے ایس کے 515، اری 6، کے ایس 282، نایاب اری 9 وغیرہ کی کاشت سے جہاں بہتر پیداوار حاصل ہو سکتی ہے ۔

وہیں صحت مند فصل کی فروخت سے مالی فوائد بھی حاصل ہو سکتے ہیں۔انہوں نے کاشتکاروں کو ہدائت کی کہ وہ 20 مئی سے 20جون تک دھا ن کی کاشت مکمل کر یں تاکہ چاول کی بمپر کراپ کاحصول یقینی ہو سکے۔

مزید : کامرس