کسی حکومت یا انٹیلی جنس کا مخبر نہیں ہوں ،ٹیکس ہیونز کی نا انصافیوں نے ڈیٹا لیک کرنے پر مجبور کیا ،پاناما پیپرز سامنے لانے والے مخبر کی لب کشائی

کسی حکومت یا انٹیلی جنس کا مخبر نہیں ہوں ،ٹیکس ہیونز کی نا انصافیوں نے ڈیٹا ...
کسی حکومت یا انٹیلی جنس کا مخبر نہیں ہوں ،ٹیکس ہیونز کی نا انصافیوں نے ڈیٹا لیک کرنے پر مجبور کیا ،پاناما پیپرز سامنے لانے والے مخبر کی لب کشائی

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

لندن (مانیٹرنگ ڈیسک )پاناما پیپرز سامنے لانے والے مخبر نے کہا ہے کہ کسی حکومت یا انٹیلی جنس کا مخبر نہیں ہوں، آف شور ٹیکس ہیونز کی نا انصافیوں نے ڈیٹا لیک کرنے پر مجبور کیا۔ان کا کہنا ہے کہ میں خود قانون نافذ کرنے والے اداروں کی مدد کرنے کو تیار ہوں ۔ پاناما پیپرز سامنے لانے والے شخص نے با لآخر اپنی خاموشی توڑ دی اور ایک جرمن اخبار کو تحریری انٹرویو دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ کاغذی کمپنیوں کو با لعموم ٹیکس چوری کے جرم میں ملوث بتا یا جاتا ہے ،پاناما پیپرز نے ثابت کیا کہ کاغذی کمپنیوں کو سنگین جرائم کے لیے استعمال کیا جاتاہے ۔مخبر نے بتا یا کہ گزشتہ سال جرمن اخبار کے تحقیقاتی صحافی سے رابطہ کیا تھا اور موزاک فونسیکا کی دستا ویزات جرمن اخبار کو دئیے جن میں آف شور کمپنیوں کے مالکان کی تفصیلات ،پاسپورٹ کی کاپیاں اور ای میلز شامل تھیں،جرمن اخبار نے یہ دستا ویزات آئی سی آئی جے کو فراہم کیں ،ان دستا ویزات کی ایک سال تک جانچ پڑتا ل ہوئی۔انہوں نے کہا کہ آئی سی آئی جے نے حکومتوں اور اداروں کو فائلو ں تک رسائی دینے سے انکار کیا جو کہ درست اقدام تھا ۔مخبر کا کہنا تھا کہ آئی سی آئی جے نے 83ممالک میں 100میڈ یا اداروں کو ڈیٹا تک رسائی دی ۔

مزید : بین الاقوامی