فوڈ اتھارٹی کی کارروائی، ملزموں کی ڈھٹائی

فوڈ اتھارٹی کی کارروائی، ملزموں کی ڈھٹائی

پنجاب فوڈ اتھارٹی کی طرف سے مسلسل چھاپوں، پڑتال، گرفتاریوں اور جرمانوں کے باوجود مضر صحت خوراک اور گوشت کی فروخت جاری ہے اور عوام ہی سے تعلق رکھنے والے تاجر اور دکاندار اپنے ہی شہریوں کو غیر صحت مند خوراک کھلا رہے ہیں۔ گزشتہ روز لاہور کی ٹولنٹن مارکیٹ میں چھاپہ مارا گیا تو12من بھینس/ بڑا گوشت اور11من مرغی کا غیر صحت مند گوشت پکڑ کر ضائع کیا گیا،13افراد حراست میں لئے گئے۔ اِس سے پہلے دوسرے اضلاع میں بھی ایسی کارروائیاں ہوئیں اور غیر صحت مند خوراک اور گوشت ضائع کر کے ذمہ داروں کے خلاف کارروائی کی گئی۔پنجاب فوڈ اتھارٹی کی بڑھتی ہوئی کارروائیوں پر اعتراض بھی کئے گئے خصوصاً ریستورانوں کے مالکان جز بز تھے کہ ان کو معمولی معمولی نقص پر جرمانے اور ریستوران بند کرنے کی کارروائی کا سامنا کرنا پڑا، لیکن کوئی بھی شخص یہ ماننے پر تیار نہیں کہ جو حضرات لوگوں کو حرام اور مضر صحت گوشت کھلاتے ہیں اور جو ریستوران اور ہوٹل صفائی اور خوردنی اشیا کا معیار برقرار نہیں رکھ پاتے ان کو سزا ملنی چاہئے۔ یہ حضرات عوام سے معہ منافع قیمت وصول کرتے ہیں تو یہ قانونی اور اخلاقی طور پر گاہک کو صحت مند خوراک مہیا کرنے کے پابند ہیں۔فوڈ اتھارٹی کی تسلسل کے ساتھ کارروائی کی وجہ سے کافی بہتری آئی، لیکن موسم کی وجہ سے مرغیوں کے مرنے یا بیمار ہونے کے علاوہ بڑے گوشت والے جانوروں کی بیماریوں کے باوجود ذبح کر کے لوگوں کو کھلانے کا سلسلہ محض اِس لئے بند نہیں کیا جاتا کہ نقصان ہو گا، حالانکہ منافع کی شرح اتنی زیادہ ہے کہ کوئی بھی خوراک فروخت کرنے والا یہ سب برداشت کر سکتا ہے۔ ان کو خود بھی چاہئے کہ وہ اللہ کو بھی جواب دہ ہیں، حرام اور غیر صحت مند اشیاء فروخت نہ کریں۔

مزید : اداریہ

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...