پبلک ہیلتھ انجینئرنگ ہاؤسنگ سکیم کے ڈیویلپرز نے بلڈنگ بائی لاز کو ہوا میں اڑا دیا

پبلک ہیلتھ انجینئرنگ ہاؤسنگ سکیم کے ڈیویلپرز نے بلڈنگ بائی لاز کو ہوا میں ...

لاہور(اپنے خبر نگار سے)پبلک ہیلتھ انجینئرنگ ہاؤسنگ سکیم کے ڈیویلپرز نے بلڈنگ بائی لاز کو ہوا میں اڑا دیا،ایک کنال کے پلاٹوں کو 18مرلہ کردیا اور 10مرلہ کے پلاٹوں کو 9مرلہ کردیا اور منظور شدہ سکیم کے پلاٹوں سے پلاٹوں کی تعداد بڑھادی اور لوگوں کو بیچ دئیے جبکہ اصل مالکان خوار ہوگئے اتھارٹی 18مرلہ اور9مرلہ کے بلڈنگ پلان منظور نہیں کرتی کیونکہ جو ایل ڈی اے میں جو نقشہ منظورہے اس میں پلاٹوں کے سائز ایک کنال اور دس مرلہ ہے ۔جس کی وجہ سے مالکان نے بغیر نقشہ کے تعمیرات شروع کر دی ہیں اس میں ایل ڈی اے کے افسر اور اہلکار شامل ہیں ۔ایل ڈی اے کے ریکارڈ کے مطابق پلاٹس ایک کنال اور دس مرلہ ہیں جس کی وجہ سے نقشے منظور نہیں ہوتے اور مالکان بغیر نقشہ کے ہی تعمیرات کر رہے ہیں ۔ اس حوالے سے جب پبلک ہیلتھ انجینئرنگ ہاؤسنگ سکیم کے صدر سے بات کی گئی تو ان کا کہنا تھا کہ ہم نے ریوائز سکیم ایل ڈی اے میں جمع کرائی ہے جس کو اتھارٹی منظور نہیں کر رہی ہے۔

مزید : میٹروپولیٹن 4

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...