کرپشن کیس ، ڈاکٹر عاصم حسین پر فعد جرم عائد ، ملزم کا صحت جرم سے انکار

کرپشن کیس ، ڈاکٹر عاصم حسین پر فعد جرم عائد ، ملزم کا صحت جرم سے انکار

 کراچی( آن لائن ) 462 ارب روپے کی کرپشن کے مقدمے میں سابق مشیر پٹرولیم ڈاکٹر عاصم حسین پر فرد جرم عائد کر دی گئی ،ملزم نے صحت جرم سے انکار کر دیا جمعہ کے روز احتساب عدالت میں سابق مشیر پٹرولیم کیخلاف کیس کی سماعت ہوئی۔ فاضل جج نے کہا کہ ملزموں کیخلاف ٹرسٹ کی زمین کے غلط استعمال ، مالی معاملات میں کرپشن اور منی لانڈرنگ جیسے سنگین نوعیت کے الزامات ہیں ، تمام شواہد اور گواہوں کے بیانات کی روشنی میں سابق مشیر پٹرولیم ڈاکٹر عاصم حسین کو ملزم قرار دیتے ہوئے ان کیخلاف فرد جرم عائد کر دی گئی۔ ڈاکٹر عاصم حسین نے عدالت کا فیصلہ سننے کے بعد اسے تسلیم کرنے سے انکار کر دیا اور کہا کہ ان پر لگائے گئے تمام الزامات بے بنیاد اور جھوٹے ہیں ، وکیل استغاثہ کی جانب سے کیس میں جو دستاویزات پیش کی گئی ہیں وہ جعلی اور جھوٹی ہیں اور ان کا حقائق سے کوئی تعلق نہیں۔ ڈاکٹر عاصم نے مقدمے میں صحت جرم سے انکار کر دیا اور کہا کہ مقدمے کے تمام ثبوت جھوٹے ہیں اور انہیں سیاسی انتقام کا نشانہ بنایا جا رہا ہے۔ دوران سماعت ڈاکٹر عاصم حسین کے بار بار بولنے پر عدالت نے اظہار برہمی کیا جس پر ڈاکٹر عاصم حسین نے عدالت سے معذرت کر لی۔پیشی کے موقع پر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے ڈاکٹر عاصم حسین نے کہا ہے کہ ’’میں نے نیب کی بکری چرا لی ہے ‘‘ اور نیب اب مجھ پر بکری چوری کا مقدمہ بنائے گی۔ سب کو معلوم ہے کہ میں اس حکومت کا سیاسی قیدی ہوں اور مجھے اندازہ ہے کہ مجھ پر مزید کیس بنائے جا رہے ہیں۔تاہم دبئی میں جائیدادیں بنانے والوں کا بھی حساب ہونا چاہئیے، میڈیا نے دبئی لیکس لا کر بڑے پردہ نشینوں کے پردے فاش کر دیے۔ڈاکٹر عاصم کا مزید کہنا تھا کہ کیس بنانے کیلئے پورے پاکستان میں صرف میں ہی ملا ہوں،کرپشن کرنے والوں کو سرکاری پروٹوکول اور میں جیل میں ہوں۔انہوں نے مطالبہ کیا کہ میر ے کیس میں تحقیقات کیلئے بھی کمیشن بنایا جائے اور جن افراد کے نام سامنے آئے ہیں انہیں بھی پکڑا جائے۔

ڈاکٹر عاصم حسین

مزید : کراچی صفحہ اول

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...