، بجٹ میں ڈیمزاورتعلیم کیلئے زیادہ فنڈزمختص کئے جائیں،الماس حیدر

، بجٹ میں ڈیمزاورتعلیم کیلئے زیادہ فنڈزمختص کئے جائیں،الماس حیدر

لاہور(اسد اقبال ) موجو دہ حکومت کی مثبت معاشی پالیسیوں کی بدولت ملکی معیشت مستحکم اور کاروباری سر گر میوں کو فروغ مل رہا ہے، تاہم ضرورت اس امر کی ہے کہ وفاقی حکومت آئندہ مالی سال کے بجٹ میں توانائی بحران پر قابو پانے کے لیے خصوصی طورپر ڈیمز کی تعمیر کے لیے کثیر رقم اور سکلڈ ڈویلپنٹ سمیت تعلیم کے بجٹ میں اضافہ کر ے جبکہ لاہور سمیت ملک بھر میں قائم انڈسٹری ایریاز کو انڈسٹریل زون میں ڈکلیئر کر تے ہوئے صنعتکاروں کے حوصلے بلند کرے ۔ان خیالات کا اظہار لاہور چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹر ی کے سینئر نائب صدر الماس حیدر نے "پاکستان بجٹ تجاویز"میں اظہار خیال کر تے ہوئے کیا ۔ الماس حیدر نے توقع ظاہر کی ہے کہ وفاقی بجٹ 2016-17ء کاروبار دوست ہوگا اور اس میں توانائی و پانی کے شعبوں پر خاص توجہ مرکوز رکھی جائے گی۔ انھوں نے کہا کہ توانائی کی قلت پر قابو پانے کے لیے پالیسی ساز آبی ذخائر کی تعمیر، تھرکول سے توانائی کے حصول اورپاکستا ن ایران گیس پائپ لائن منصوبے کی جلد تکمیل کے لیے موزوں فنڈز مختص کرے۔ انہوں نے کہا کہ وفاقی بجٹ میں کالاباغ، داسو پاور پراجیکٹ، دیامیر بھاشا ڈیم، منڈا ڈیم، گومل زیم ڈیم، ستپارہ پاور پراجیکٹ اور کرم تنگی ڈیم کے لیے زیادہ سے زیادہ فنڈز مختص کیے جائیں۔ انہوں نے کہا کہ مو جو دہ حکو مت معیشت کر سنبھالا دینے میں کامیاب ہو گئی ہے تاہم معیشت کے پہیے کو آگے دھکیلنے کی ضرورت ہے ۔جس کے لیے صنعتکاروں کو ریلیف اور توانائی بحران کا خاتمہ اشد ضروری ہے۔انھوں نے کہاکہ ایک کمپنی کو سالانہ 47بار ٹیکس ادا کر نا پڑتا ہے جس کے لیے ایسا میکنزم بنایا جائے جس میں ٹیکس کی ادائیگی آسان ہو سکے ۔انھوں نے کہا کہ لاہور میں اس وقت چالیس ہزار کے قر یب چھوٹی و بڑی فیکٹریا ں ہیں جن میں سے صر ف 1200فیکٹریاں انڈسٹریل زون میں ہیں حکو مت کو چائیے کہ صنعتکاروں کو ریلیف دینے اور ملکی معیشت کو مزید مستحکم اور مظبو ط بنانے کے لیے انڈسٹری ایریاز کو انڈسٹری زون کا درجہ دیا جائے ۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر