فضائی آلودگی میں سائیکلنگ،واک،دنیا میں ہزاروں افراد ورزش سے مررہے ہیں:رپورٹ

فضائی آلودگی میں سائیکلنگ،واک،دنیا میں ہزاروں افراد ورزش سے مررہے ہیں:رپورٹ
فضائی آلودگی میں سائیکلنگ،واک،دنیا میں ہزاروں افراد ورزش سے مررہے ہیں:رپورٹ

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

نئی دہلی(مانیٹرنگ ڈیسک)پیدل چلنے اور سائیکل چلانے کونہ صرف بہترین ورزش قرار دیا جا تا ہے بلکہ اسے ہر شخص کو اپنانے کی نصیحت بھی کی جاتی ہے۔لیکن اگر بات ہوکراچی، نئی دہلی یا قطر جیسے انتہائی آلودہ شہروں کی تووہاں صورتحال مختلف ہے۔

نیو سائنٹسٹ نامی ویب پرشائع رپورٹ کے مطابق اگرچہ ہمیں صحت کا خاص خیال رکھنے کیلئے ورزش کا کہا جاتا ہے لیکن پھیپھڑوں اور دل کی بیماری کاباعث بننے والی فضائی آلودگی کے باعث ورزش کے لیئے باہر نہ جانے کا مشورہ دیا جا رہا ہے۔

ایک تحقیق میں کہا گیا ہے کہ آلودگی ورزش کو فائدے کے بجائے نقصان میں نقصان میں بدل دیتی ہے۔رپورٹ کے مطابق اگرچہ لندن سمیت کئی شہروں میںسائیکلنگ اور واک کو صحت کیلے بہترین سمجھا جاتا ہے تاہم بدقسمتی سے دنیا کے آلودہ ترین شہروں میں شامل کراچی،بھارتی دارالحکومت نئی دہلی اور قطری دارالحکومت دوحہ جیسے میں یہ انسانی صحت کیلئے نقصان دہ ہے۔یونی ورسٹی آف کیمبرج کے جمیز وڈ کوک کا کہنا ہے کہ ان کی ٹیم نے دنیا بھر میں آلودگی سے متاثرہ اور غیر متاثرہ علاقوں میں ورزش کے انسانی زندگی پر اثرات کا جائزہ لینے کیلئے اعداد وشمار جمع کیئے ہیں،انہوں نے کہا کہ آلودگی سے ہر سال ہزاروں افراد مررہے ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ فضائی آلودگی کے حوالے سے دنیا کے بدترین شہر نئی دہلی میں سائیکلنگ انتہائی نقصان دہ ہے،اگردہلی میں ایک ہفتے میں پانچ دن یا کم از کم نصف گھنٹہ روزانہ سائیکل چلائی جائے تو یہ انسان کیلئے تندرستی کے بجائے نقصان کا باعث بنے گی۔جو جتنا زیادہ سائیکل چلاتے ہیں وہ آلودگی سے اتنا ہی متاثر ہوتے ہیں۔

مزید : ڈیلی بائیٹس