بے رحمانہ احتساب نہیں ہوگا تو عوام مسائل میں پھنستے جائیں گے: افتخار چوہدری

بے رحمانہ احتساب نہیں ہوگا تو عوام مسائل میں پھنستے جائیں گے: افتخار چوہدری
بے رحمانہ احتساب نہیں ہوگا تو عوام مسائل میں پھنستے جائیں گے: افتخار چوہدری

اسلام آباد (ویب ڈیسک) پاکستان جسٹس اینڈ ڈیمو کریٹک پارٹی کے سربراہ و سابق چیف جسٹس محمد چوہدری نے کہا ہے کہ اگر غیر ملکی بینکوں میں محفوظ 200 ارب ڈالر کا ملکی سرمایہ واپس ملک میں نہ لایا گیا تو ملکی معیشت خطرناک حد تک زبوں حالی کا شکار ہو جائے گی۔ جب تک بے رحمانہ احتساب نہیں ہو گا تو عوام مسائل کی دلدل میں پھنستے جائیں گے۔ پانامہ لیکس کے معاملے میں حکومت اور اپوزیشن جماعتوں کا ضوابط کا رپر اتفاق نہ ہونا ثابت کرتا ہے کہ سیاسی جماعتیں اپنے بچاﺅ کی مہم چلا رہی ہیں ‘ پارٹی ترجمان شیخ احسن الدین کے جاری کردہ بیان کے مطابق افتخار محمد چوہدری نے کہا ہے کہ ملک میں حکومت اور اپوزیشن کے درمیان بڑھتی ہوئی کشیدگی اور پانامہ لیکس سے ہٹ کر سیاست دانوں ‘ جرنیلوں ‘ بیورو کریٹس ‘ تاجروں کی غیر ملکی جائیدادوں کے بارے میں نت نئے انکشافات آف شور کمپنیوں ‘ ٹیکس سے بچاﺅ منی لانڈرنگ اور ہنڈی کے ذریعے ملکی سرمایہ کو غیر ممالک میںمنتقل کرنے کی بناءپر اس ملک کی معاشی حالت خطرناک صورتحال اختیار کر چکی ہے۔ دوسو ارب ڈالر غیر ملکی بینکوں میں پڑے ہیں اور ہمارے ملک پر کل قرضہ 72 ارب ڈالر ہے ۔

مزید : اسلام آباد

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...