بھارتی سیکیورٹی اداروں کے دعوی ایک بار پھر جھوٹے ثابت ، خطرناک دہشت گرد قرار دیکر گرفتار کئے جانے والے 10میں سے 4 افرادکو بے گناہ قرار دیکر رہا کر دیا

بھارتی سیکیورٹی اداروں کے دعوی ایک بار پھر جھوٹے ثابت ، خطرناک دہشت گرد قرار ...
بھارتی سیکیورٹی اداروں کے دعوی ایک بار پھر جھوٹے ثابت ، خطرناک دہشت گرد قرار دیکر گرفتار کئے جانے والے 10میں سے 4 افرادکو بے گناہ قرار دیکر رہا کر دیا

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

دہلی(مانیٹرنگ ڈیسک)بھارتی سیکیورٹی ادارے میڈیا کی شہ سرخیوں میں آنے کے لئے پہلے بڑے بڑے دعوی کرتے ہیں لیکن ان کی جانب سے جھوٹ پر مبنی دعووں کا پول کھلتے دیر نہیں لگتی ،تین روز قبل بھی بھارتی سیکیورٹی اداروں نے دعوی کیا تھا کہ انہوں نے دہلی کو بڑی تباہی سے بچا لیا ہے اور جیش محمد کے10خطرناک دہشت گردوں کو گرفتار کر لیا ہے ،اب ان 10خطرناک مبینہ دہشت گردوں میں سے 4کو بے گناہ ہونے پر سیکیورٹی اداروں کورہا کرنا پڑا ہے ۔

بھارتی نجی چینل’’این ڈی ٹی وی‘‘ کے مطابق بھارتی سیکیورٹی اداروں نے دہشت گردی کے الزام میں جن 10افراد کو حراست میں لیا تھاان میں سے 4افراد کو بے گناہ قرار دیتے ہوئے رہا کر دیا ہے ،سیکیورٹی اداروں کا کہنا ہے کہ ان کی تفتیش میں یہ بات ثابت ہوئی ہے کہ گرفتار ہونے والے تین دہشت گرد ساجد ،سمیر اور شاکر ان چاروں کا برین واش کر کے انہیں جیش محمد میں شامل ہونے کے لئے تیار کر رہے تھے ،لیکن یہ چاروں کا کردار کوئی بہت فعال نہیں تھا جس کی وجہ سے تفتیش مکمل کر کے ان کو رہا کر دیا ہے ۔سیکیورٹی اداروں کا کہنا ہے کہ وہ رہا ہونے والے ان چاروں کو مختلف اعتدال پسند مذہبی رہنماؤں اور سائیکولوجسٹ سے ملوائیں گے تاکہ یہ لوگ دوبارہ انتہا پسندی کی طرف مائل نہ ہو سکیں ،جبکہ باقی 6افراد سے پوچھ گچھ جاری ہے ۔واضح رہے کہ تین روز قبل بھارتی سیکیورٹی اداروں نے دہلی کے چاد باگ،غازی آباد کے لونی اور یوپی کے دیوبند میں مختلف مقامات پر چھاپے مار کر 10افراد کو حراست میں لیا تھا اور دعوی کیا تھا کہ یہ سب بڑے دہشت گرد اور ان کا تعلق جیش محمد سے ہے ،بھارتی سیکیورٹی اداروں کا دعوی تھا کہ یہ دس رکنی گروہ دہلی میں دہشت گردی کی بڑی پلاننگ کر کے خوفناک تباہی پھیلانا چاہتا تھا،سیکیورٹی ادروں نے ان دس افراد سے بھاری مقدار میں گولہ بارود اور بم بنانے کے سامان کی برآمدگی کا بھی دعوی کیا تھا ۔دوسری طرف جمعیت علمائے ہند نے دس بے گناہ مسلمان نوجوانوں کی گرفتاری کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا تھا کہ یہ سب مکمل بے گناہ ہیں اور ان کا کسی بھی تخریبی کاروائی سے کوئی تعلق نہیں ہے ،بھارتی سیکیورٹی ادارے مسلمانوں کو دہشت گرد ثابت کرنے کے لئے بزدلانہ کاروائیاں کر رہی ہے ،جمعیت علمائے ہند نے ان نوجوانوں کی گرفتاری کے خلاف سخت ردعمل دیا تھا ،جس کے بعد آج بھارتی سیکیورٹی اداروں نے دس میں سے چار افراد کو رہا کرنا پڑا ہے جس سے ان کے دعوی ایک مرتبہ پھر جھوٹے ثابت ہوئے ہیں ۔

مزید : بین الاقوامی