امرود کے باغبان بہتر پیداوار کیلئے پودوں کی مناسب دیکھ بھال کریں، محکمہ زراعت

امرود کے باغبان بہتر پیداوار کیلئے پودوں کی مناسب دیکھ بھال کریں، محکمہ ...

لاہور(کامرس رپورٹر) محکمہ زراعت پنجاب راولپنڈی کے ترجمان کے مطابق امرود کے باغبان بہتر پیداوار کے حصول کیلئے پودوں کی مناسب دیکھ بھال کریں۔ امرود کی گرمیوں کی فصل کو پھل کی مکھی سب سے زیادہ نقصان پہنچاتی ہے۔ یہ مکھی پھل کے اندر اپنا ڈنک داخل کر کے انڈے دیتی ہے جن سے چھوٹی چھوٹی سنڈیاں پیدا ہو کر گودے کو کھانا شروع کر دیتی ہیں اور پھل گل سڑ کر زمین پر گر جاتا ہے ۔ سوکے کی بیماری کے حملہ سے پودے کی شاخیں مرجھا جاتی ہیں، پتوں کا رنگ زرد یا براؤن ہو جاتا ہے، زمین کے نزدیک تنے سے چھلکا سوکھنا شروع ہو جاتا ہے ، جڑیں گل جاتی ہیں اور چند مہینوں میں پودا مر جاتا ہے ۔ یہ بیماری جڑوں پر حملہ کرنے والی پھپھوندی کی وجہ سے پھیلتی ہے۔ اس کے تدارک کے لئے بیماری سے متاثرہ باغات میں بہت زیادہ پانی نہ لگائیں۔ بیمار پودوں کی جڑوں میں محکمہ زراعت (توسیع و پیسٹ وارننگ) کے مقامی فیلڈ عملہ کے مشورہ سے سفارش کردہ پھپھوندی کش دوائی ڈالیں اور باغات میں گرا ہوا تمام پھل اکٹھا کر کے زمین میں دبا دیں۔ امرود کے پودوں کو سال میں تقریباً 12 سے 15 مرتبہ آبپاشی کی ضرورت ہوتی ہے۔ چھوٹے پودوں کو سارا سال تھوڑے تھوڑے وقفے کے بعد پانی لگاتے رہیں۔

امرود کے پودوں پر جب پھل آ رہا ہو تو اس وقت تک پانی روک دیں جب تک کہ پھل مکمل طور پر سیٹ نہ ہو جائے۔

B

مزید : کامرس


loading...