مہنگے پاکستان انویسٹمنٹ بانڈ حکومتی قرضوں کا اب بھی بڑا حصہ

مہنگے پاکستان انویسٹمنٹ بانڈ حکومتی قرضوں کا اب بھی بڑا حصہ

 کراچی(اکنامک رپورٹر) مہنگے پاکستان انویسٹمنٹ بانڈز ا بھی حکومتی قرضوں کا بڑا حصہ ہیں جو بھاری قرصوں کی خدمات پر منتج ہوا ہے۔ میڈیا رپورٹ کے مطابق سرمایہ کاری بانڈز کے ذریعے حکومت نے مارچ تک 12مہینوں میں مارکیٹ ٹریژری بانڈز کے ذریعے 1.1 کھرب روپے اکٹھے کئے ہیں تاہم مجموعی قرضوں کے رجحان سے معلوم ہوتا ہے کہ لیکویڈٹی کی ضرورت تیزی سے بڑھ رہی ہے۔ سٹیٹ بینک آف پاکستان کی حالیہ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ حکومت نے مارچ کے آخر تک 4276 ارب روپے کی لاگت سے انویسٹمنٹ بابنڈز رکھے جو 1 سال سے پہلے کے 508 ارب روپے سے نیچے ہیں مارچ 2016 ء میں پی آئی بی کے ہولڈنگز 4788 ارب روپے تھی۔ پی آئی بی کی لاگت موجودہ شرح منافع سے زیادہ ہے حکومت پی آئی بی کو واپس کررہی ہے تاہم طویل المدتی سرمایہ کاری کیلئے کچھ وقت لگتا ہے۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق پی آئی بی کی جگہ 12 مہینوں میں ٹریژری بل کے سٹاک میں 1153 ارب روپے جمع کرائے گئے اور مجموعی اعداد و شمار 3980 ارب روپے تک پہنچا دیئے۔

مزید : کامرس


loading...