سپریم کورٹ کا بلوچستان میں 2200 درختوں کی کٹائی کا ازخود نوٹس

سپریم کورٹ کا بلوچستان میں 2200 درختوں کی کٹائی کا ازخود نوٹس

اسلام آباد (آن لائن ) چیف جسٹس پاکستان میاں ثاقب نثار نے بلوچستان میں سڑک کو کشادہ کرنے کیلئے2200 درختوں کی کٹائی پر ا ز خو د نوٹس لیتے ہوئے رجسٹرار آفس کو کیس سماعت کیلئے مقرر کرنے کی ہدایت کردی ہے ۔ سپریم کورٹ کے ترجمان کی جانب سے جاری اعلامیہ کے مطابق چیف جسٹس نے ایک درخواست پر نوٹس لیا ہے جس میں کہا گیا تھابلوچستان کے ضلع پشین میں دس کلو میٹر پشین یارو روڈ کو کشادہ کرنے کا منصوبہ شروع کیا گیا ہے جس کی زد میں 22سو سرسبز درخت آ رہے ہیں ،درختوں کے تحفظ کیلئے سڑک کیلئے متبادل روٹ بنایا جا سکتا ہے مگر کوئی بھی متعلقہ ادارہ کام نہیں کر رہا ،یہ درخت بلوچستان کے پہاڑی مقام اور خشک سالی کو ختم کرنے کیلئے ایک اثاثے کی حیثیت رکھتے ہیں ،ا علامیہ کے مطابق پشین میں درختوں کی کٹائی کے حوالے سے صوبائی حکومت کے متعلقہ ادارے ، سیکرٹری کمیونیکشن اینڈ ورکس ،سیکرٹری جنگلات ،ڈی جی انوائرمنٹ پروٹیکشن ایجنسی ، ڈپٹی کمشنر سے رپورٹ طلب کی گئیں تھیں تاہم تسلی بخش جواب نہ ملنے کے باعث چیف جسٹس نے 184(3)کے تحت ازخود نوٹس لیتے ہوئے رجسٹرار سپریم کورٹ کو کیس سماعت کیلئے مقرر کرنے کی ہدایت کردی ہے ۔

مزید : علاقائی


loading...