غریب کسان کی کمائی پٹواری یا تحصیلدار مافیا کو ہڑپ نہیں کرنے دوں گا :شہباز شریف

غریب کسان کی کمائی پٹواری یا تحصیلدار مافیا کو ہڑپ نہیں کرنے دوں گا :شہباز ...

اوکاڑہ،حویلی لکھا(بیورو رپورٹ،ڈسٹرکٹ رپورٹر،نمائندہ پاکستان +نامہ نگار)وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف نے اوکاڑہ کی تحصیل دیپالپور کے علاقے میں ہیڈسلیمانکی گندم خریداری مرکز پر اچانک چھاپہ مارا۔وزیراعلیٰ بغیر پروٹوکول عام کار میں بیٹھ کر گندم خریداری مرکز پہنچے اورمرکز پر کاشتکاروں کو دی جانے والے سہولتوں کا جائزہ لیا۔مقامی انتظامیہ اورپولیس وزیراعلیٰ کے اچانک دورے سے مکمل طور پر لاعلم رہی۔وزیر اعلی نے گندم خریداری مرکز پر کاشتکاروں کو دی جانے والی سہولتوں اورباردانہ کی تقسیم کے امور کا جائزہ لیااور اس ضمن میں کاشتکاروں کی شکایات کا سخت نوٹس لیتے ہوئے موقع پر ہی ہدایات جاری کیں ۔ وزیراعلیٰ نے گندم خریداری مرکز کے باہر ٹرک اورٹرالیوں کی قطاروں کا نوٹس لیتے ہوئے ان ٹرکوں اور ٹرالیوں سے گندم کو فوری طورپر آف لوڈ کرنے کی ہدایت کی ۔وزیراعلیٰ نے کاشتکاروں کی جانب سے باردانہ نہ ملنے اور ریکارڈ میں رد وبدل کی شکایات کا فوری نوٹس لیتے ہوئے معاملے کی انکوائری کا حکم دیا اور ذمہ داروں کے خلاف سخت کارروائی کا حکم دیا۔وزیراعلیٰ کے اچانک دورے کی اطلاع پرگندم خریداری مرکز کا انچارج عملے سمیت غائب ہوگیاجس پر وزیر اعلی نے متعلقہ عملے کے خلاف کارروائی کا حکم دیا۔ وزیر اعلی نے گندم خریداری مرکز کے باہر کاشتکاروں کے مسائل سنے اور ان مسائل کے فوری حل کی یقین دہانی کرائی۔وزیر اعلی نے گندم خریداری مرکز پر کا شتکاروں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ میں اپنے کاشتکار بھائیوں کی خدمت کیلئے یہاںآیا ہوں ،کسان بھائیوں کا مفاد بے حد مقدم ہے اورکاشتکاروں کے مفاد کے تحفظ کوہر قیمت پر یقینی بناؤں گا۔ میرا جینا مرنا آپ کے ساتھ ہے ۔ میں پہلے بھی آپ کے ساتھ کھڑا رہا ہوں اور آئندہ بھی آپ کے مفادات پر کوئی آنچ نہیں آنے دوں گا۔وزیراعلیٰ نے کاشتکاروں سے مخاطب ہوتے ہوئے کہا کہ جس نے آپ سے زیادتی کی ہے وہ بچ نہیں پائے گا۔غریب کسان کی محنت کی کمائی پٹواری یا تحصیلدار مافیا کو ہڑپ نہیں کرنے دوں گا۔ انہوں نے کہا کہ مقامی تھانے میں غریب کاشتکاروں کی فائلوں کے ریکارڈ میں رد و بدل کی شکایات افسوسناک ہیں اور میں نے اس کا سخت نوٹس لیا ہے اور اس واقعہ کے ذمہ دار سزا سے بچ نہیں پائیں گے اورآج ہی کارروائی ہوگی اور آپ کے ساتھ ہر قیمت پر انصاف ہوگا۔انہوں نے کہا کہ کاشتکاروں سے زیادتی کرنے والوں میں خواہ انتظامی افسران ہوں یا پولیس افسران، ان کے خلاف کارروائی ہو گی اور میرا آپ سے وعدہ ہے کہ آپ کا مسئلہ میں اپنا مسئلہ سمجھ کر حل کراؤں گااور جلد دوبارہ اس سنٹر پر آؤں گا۔ وزیر اعلی نے ڈپٹی کمشنر اورڈی پی او کو ہدایت کی کہ وہ اپنی نگرانی میں کاشتکاروں کو باردانہ کی فراہمی یقینی بنائیں اورکھڑی گاڑیوں سے گندم جلد آف لوڈ کی جائے تا کہ کاشتکار کی پریشانی دور ہو سکے ۔وزیر اعلیٰ پنجاب نے کسانوں سے ان کے مسائل سنے تو انہوں نے محکمہ خوراک کے افسران اور دیپالپور تحصیل انتظامیہ سے بر ہمی کا اظہار کرتے ہوئے ان کی سرزنش کی اور موقع پر اسسٹنٹ کمشنر دیپالپور خالد عمر قریشی اور ڈی ایس پی دیپالپور مرزا قدوس کو معطل کرنے اور ان کے خلاف ضلعی انتظامی افسران کو انکوائری کا حکم دیا وزیر اعلیٰ پنجاب نے کاشتکاروں اور کسانوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ صوبہ بھر کے کسانوں اور کاشتکاروں سے گندم کا ایک ایک دانہ خرید کیا جائے گا اور گندم کے لیے باردانہ کی فراہمی میں بھی مکمل شفافیت کی ہدایات جاری کی گئی ہیں انہوں نے کہا جس طرح سے حکومت کسانوں کو سستی بجلی پانچ روپے تیس پیسے فی یونٹ دے رہی ہے کسانوں کو بھی چاہیے کے اپنے بل بجلی بر وقت ادا کریں میاں شہباز شریف نے کہا کہ کسانوں کو سہولیات کی فراہمی کے حوالے سے کوئی کمی کوتاہی برداشت نہیں کی جائے گی ضلعی انتظامیہ کے مطابق وزیرا علیٰ نے اسسٹنٹ کمشنر دیپالپور خالد قریشی اور ڈی ا یس بھی مرزا قدوس کے معطلی کے حوالے سے وزیر اعلیٰ نے جو زبانی احکامات صادر کیے تھے ابھی اس حوالے سے تحریری احکامات موصول نہیں ہوئے تاہم اس حوالے سے وزیر اعلیٰ پنجاب نے جو انکوائری کا حکم صادر کیا تھا وہ بھی کی جا رہی ہے ۔

شہباز شریف

لاہور(جنرل رپورٹر)وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف نے پی اے ایف بیس، سرور روڈ لاہور میں ٹیچرز ٹریننگ انسٹی ٹیوٹ برائے خصوصی تعلیم کے منصوبے کاافتتاح کیا۔چیف آف دی ائیرسٹاف ائیرچیف مارشل سہیل امان، صوبائی وزراء ڈاکٹر عائشہ غوث پاشا،چوہدری محمد شفیق اور پاک فضائیہ کے اعلیٰ افسران بھی اس موقع پرموجود تھے۔وزیراعلیٰ محمد شہبازشریف نے افتتاح کے بعد پنجاب حکومت اور پاک فضائیہ کے اشتراک سے نئے تعمیر ہونے والے ٹیچرز ٹریننگ انسٹی ٹیوٹ برائے خصوصی تعلیم کا دورہ کیااورادارے کے مختلف حصے دیکھے اوراساتذہ سے ملاقات کی اوران سے ادارے میں مہیا کی گئی سہولیات کے بارے میں دریافت کیا۔وزیراعلیٰ محمد شہبازشریف نے افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پاک فضائیہ اورپنجاب حکومت نے باہمی اشتراک سے ٹیچرز ٹریننگ کا بہترین ادارہ قائم کیا گیا ہے اوراس شاندار ادارے کے قیام پر ائیرچیف مارشل سہیل امان،پاک فضائیہ کے افسران،پنجاب کے وزیربرائے خصوصی تعلیم اوران کی ٹیم کو دل کی اتھاہ گہرائیوں سے مبارکباد دیتا ہوں ۔انہوں نے کہا کہ پنجاب حکومت اورپاک فضائیہ نے ملکر جو شاندار ادارہ قائم کیا ہے اس کی جتنی بھی تعریف کی جائے کم ہے اور اس شاندار ماڈل کو دوسرے صوبوں میں بھی اپنایا جانا چاہیے۔ سپیشل ایجوکیشن پاکستان میں ایک چیلنج کی حیثیت رکھتا ہے جس سے ہمیں ملکرعہدہ برآ ہونا ہے ۔پاک فضائیہ اورپنجاب حکومت نے یہ شاندار ادارہ قائم کر کے بہت عظیم کام کیا ہے ۔انہوں نے کہا کہ دعا ہے کہ اللہ تعالیٰ پاکستان کو دنیا کی عظیم مملکت بنائے اوریہ ملک صحیح معنوں میں قائد ؒ اوراقبالؒ کا پاکستان بنے۔ائیر چیف مارشل سہیل امان نے وزیراعلیٰ شہبازشریف کو سونےئربھی دیا ۔ بیس کمانڈر ائیر کموڈور سلمان محبوب نے ادارے میں تربیتی کورسزکے بارے میں آگاہ کیااوربتایا کہ یہ ادارہ18ماہ میں مکمل ہونا تھا لیکن اس ادارے کو مقررہ مدت سے کئی پہلے 13ماہ میں مکمل کیا گیا۔دوسری طرفشہباز شریف کی زیر صدارت اعلی سطح کا اجلاس منعقد ہوا جس میں وزیر اعلیٰ نے جی ٹی روڈ پر راوی پل سے کالاشاہ کاکو تک ایلی ویٹڈایکسپریس وے کے منصوبے کی منظوری دی ۔6 کلومیٹر طویل ایلی ویٹڈایکسپریس وے 8 لین پر مشتمل ہوگا جس کی 6 لین عام ٹریفک کے لئے جبکہ2 لین میٹروبس کے لئے مختص ہو ں گی ۔ایلی ویٹڈایکسپریس وے کا ساڑھے چار کلو میٹر ایلی ویٹڈجبکہ ڈیڑھ کلو میٹر حصہ زمین پر ہو گا ۔اجلاس میں میٹروبس سروس کو بھی شاہدرہ سے رچنا ٹاؤ ن تک توسیع دینے کا فیصلہ کیا گیا۔وزیر اعلی محمد شہباز شریف نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ جدید انفراسٹرکچر معاشی ، صنعتی اور تجارتی سرگرمیاں بڑھانے کا باعث بنتا ہے اس لئے پنجاب حکومت نے اربوں روپے کی لاگت سے صوبے بھر میں انفراسٹرکچر کو بہتر بنایا ہے ۔ وزیر اعلی نے متعلقہ حکام کو ہدایت کی کہ دریائے راوی پر ایک اور پل بنانے کا بھی منصوبہ بنایا جائے اور ایلی ویٹڈایکسپریس وے کو ہارٹیکلچر سے دیدہ زیب بنانے کیلئے پلان تیار کیا جائے۔ رکن قومی اسمبلی ملک ریاض ، ایم پی اے غزالی سلیم بٹ ، منیجنگ ڈائریکٹر پنجاب ماس ٹرانزٹ اتھارٹی، چیئرمین منصوبہ بندی و ترقیات، سیکرٹریز تعمیرات و مواصلات ، ہاؤسنگ ، کمشنر لاہور ڈویژن، ڈی جی ایل ڈی اے اور متعلقہ حکام نے اجلاس میں شرکت کی جبکہسیکرٹری آبپاشی ویڈیولنک کے ذریعے اجلاس میں شریک ہوئے۔

وزیراعلیٰ پنجاب

مزید : صفحہ اول


loading...