دہشت گردی کے مائنڈ سیٹ کو تبدیل کرنے کیلئے صوفیاء کی تعلیمات کو عام کیا جائے،صوفی غلام علی

دہشت گردی کے مائنڈ سیٹ کو تبدیل کرنے کیلئے صوفیاء کی تعلیمات کو عام کیا ...

لاہور(نمائندہ خصوصی)پیر طریقت حضرت صوفی محمد علی محصور چشتی صابری کی سالانہ عرس کی تقریب سے شاہدرہ میں خطاب کرتے ہوئے صوفی غلام علی چشتی پیپلز پارٹی انسانی حقوق ونگ لاہور کے رہنما نصیر احمد خلیفہ رانا عبدالرحمان چشتی، وقاص پرنس نے کہا کہ اس وقت ملک دہشت گردی کا شکار ہے پاک فوج آپریشن ضرب عضب اور ردالفساد کے ذریعے دہشت گردوں کا صفایا کررہی ہے لیکن فکری اور معاشرتی محاذ پر ضروری ہے کہ دہشت گردی کے مائنڈ سیٹ کو تبدیل کرنے اور اس کیلئے ضروری ہے کہ صوفیاء کرام کی تعلیمات کو عام کیا جائے۔ صوفیاء کرام کی تعلیمات معاشرہ میں لوگوں کوامن، بھائی چارہ اور رواداری کی تعلیم دیتی ہے برصغیر پاک و ہند میں بھی صوفیاء کرام نے اسلام کے آفاقی اور پرامن پیغام کو عام کرنے کیلئے اہم کرداادا کیا۔صوفیاء کرام کی بلا تفریق مذہب، مسلک لوگوں سے محبت نے اسلام کو پھیلایا۔ آج بھی صوفیاء کرام کے مزارات لوگوں کو ذہنی اور دلی سکون مہیا کررہے ہیں دہشت گرد صوفیوں کی تعلیمات اور پیغام سے خوفزدہ ہیں کیونکہ دہشت گرد سمجھتے ہیں کہ صوفی ازم ہی معاشرہ میں مختلف زبانوں اور ثقافتوں کے لوگوں کو اکٹھا کرنے کیلئے پل کا کردار ادا کرسکتی ہیں اور لوگوں کو دہشت گردی کے خلاف راغب کرسکتے ہیں اس لیے وہ ان صوفیاء کرام کے مزارات کو نشانہ بنارہے ہیں لیکن صوفی ازم کے پیروکار ہمیشہ امن، بھائی چارہ اور رواداری کے فروغ کیلئے اپنی جدوجہد جاری رکھیں گے۔ انہوں نے مزید کہا کہ حکومت کو چاہئے کہ صوفیاء کرام کے محبت، امن آشتی کے پیغام اور تعلیمات کو نصاب کا حصہ بنائے تاکہ دہشت گردی کے بڑھتے ہوئے عفریت کا مقابلہ کیا جاسکے اور پاکستان محبت اور امن کا گہوارہ بنا جائے۔ تقریب کے اختتام پر تمام زائرین نے مزار پر چادر چڑھائی اور ملک و قوم کی سلامتی اور ترقی کیلئے دعا کی۔

مزید : میٹروپولیٹن 4


loading...