غیر قانونی بھرتیاں کیس،راجہ پرویز اشرف کی بریت درخواست پرنیب کو نوٹس جاری

غیر قانونی بھرتیاں کیس،راجہ پرویز اشرف کی بریت درخواست پرنیب کو نوٹس جاری

لاہور(نامہ نگار)احتساب عدالت کے جج سید نجم الحسن بخاری نے پیپکو میں 437افراد کو غیر قانونی طور پر بھرتی کرنے کے ریفرنس کی سماعت کے دوران سابق وزیراعظم راجہ پرویز اشرف کی جانب سے بریت کی درخواست پرنیب کو نوٹس جاری کرتے ہوئے کیس کی مزیدسماعت20مئی تک ملتوی کردی ۔احتساب عدالت نے پیپکو میں 437افراد کو غیرقانونی بھرتی کرنے کے ریفرنس میں راجہ پرویز اشرف اور سیکرٹری پیپکو شاہد رفیع سمیت 8ملزمان کو فرد جرم کے لئے طلب کیا تھا،راجہ پرویز اشرف (بقیہ نمبر33صفحہ12پر )

کے وکیل نے درخواست دائر کی کہ وہ بے گناہ ہیں لہٰذا فرد جرم سے پہلے ان کا موقف سنا جائے جبکہ سیکرٹری شاہد رفیع کے وکیل اظہر صدیق نے درخواست دائر کرتے ہوئے موقف اختیار کیا کہ ان کو مکمل طور پر ریکارڈ نہیں ملا ،فرد جرم سے پہلے ریکارڈ فراہم کیا جائے،عدالت میں دستاویزات مکمل نہ ہونے پر طویل بحث ہوئی جس کے بعد عدالت نے راجہ پرویز اشرف کی بریت کی درخواست پر نیب پنجاب کو 20مئی کیلئے نوٹس جاری کر دیا ہے جبکہ سیکرٹری شاہد رفیع کی دائر درخواست کو خارج کردیاگیا۔عدالت نے نیب کے پراسکیوشن کو 20مئی کو دلائل دینے کی ہدایت کی ہے،اس موقع پرراجہ پرویز اشرف نے کہا کہ ان پر جو الزام لگایا گیا ہے وہ غلط ہے لیکن اس کے باوجود وہ عدالتوں کے طلب کرنے پر پیش ہو رہے ہیں تاہم راجہ پرویز اشرف نے لوڈشیڈنگ کے حوالے سے بھی حکومت پر سخت تنقید کی۔

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...