کومبنگ آپریشن میں تیزی،گرلز ہاسٹلز میں بھی کارروائی کا فیصلہ

کومبنگ آپریشن میں تیزی،گرلز ہاسٹلز میں بھی کارروائی کا فیصلہ
کومبنگ آپریشن میں تیزی،گرلز ہاسٹلز میں بھی کارروائی کا فیصلہ

  


لاہور(ویب ڈیسک )نجی ہاسٹلوں میں رہائش پذیر ہوکر شہر میں دہشت گرد کارروائیاں کرنے کی حساس اداروں کی اطلاع کے بعد لاہور پولیس نے بوائز ہاسٹل میں کو مبنگ آپریشن تیز کر دئیے جبکہ شہر میں موجود گرلز ہاسٹلز میں بھی ٹارگٹ آپریشن کرنے کا فیصلہ کیا گیا  ۔

حساس اداروں کی طر ف سے لاہور پولیس کو اطلا ع دی گئی ہے کہ دہشت گرد اب بوائز ہاسٹل میں رہائش اختیار کرکے شہر میں دہشت گردی کر سکتے ہیں۔ یہ تھریٹ لیٹر موصول ہونے کے بعد اعلیٰ افسران نے تمام ایس پیز کو حکم دیا ہے کہ وہ نجی ہاسٹلوں میں سرچ آپریشن کریں اور گلی محلوں میں موجود ہر نجی ہاسٹل کو چیک کریں اور جن ہاسٹلوں میں علاقہ غیرکے طالب علم رہائش پذیر ہیں انکی بھی تلاشی لی جائے اسکے علاوہ گرلز ہاسٹلز میں انٹیلی جنس کی بنیاد پر آپریشن کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے ۔ گرلز ہاسٹلز کی انتظامیہ کیساتھ متعلقہ ایس ایچ او کو میٹنگ کرنے کی ہدایت کی گئی ہے تاکہ دہشت گرد کسی لڑکی کو تخریب کاری میں استعمال نہ کر سکیں ۔

کراچی کے حسن سکوائر میں فائرنگ سے کوسٹر ڈرائیور جاں بحق ، ملزم فرار

روزنامہ دنیا کے مطابق پچھلے 4ماہ میں لاہور پولیس نے سرچ آپریشن کے دوران 165ہاسٹلوں کو چیک کیا اور اس دوران پولیس نے 6ہزار 4سو 60افراد سے پوچھ گچھ کی جبکہ کرایہ داری ایکٹ پر صرف ایک فرد کے خلاف مقدمہ درج کیا یہ تمام سرچ آپریشن بوائز ہاسٹلز میں کئے گئے تھے ۔ اقبال ٹاؤن میں 24 ہاسٹلوں کو چیک کیا گیا اس دوران 13سو افراد سے پوچھ گچھ کی گئی، صدر ڈویژن میں 15نجی ہاسٹلز کو چیک کیا گیا اور اس دوان 750افراد کو چیک کیا گیا سول لائن ڈویژن میں14ہاسٹلزکو چیک کیا گیا اس دوران 550افراد کو چیک کیا گیا ، سٹی ڈویژن میں 9ہاسٹلز کو چیک کیا گیا اور اس دروان پولیس نے 245افراد سے پوچھ گچھ کی جبکہ کینٹ ڈویژن میں پولیس نے کسی بھی بوائز ہاسٹل کو چیک نہیں کیا اور نہیں کسی سے وہاں پر پوچھ گچھ کی گئی ۔ ان سر چ آپریشنز کے دوران صرف 30افراد کو نامکمل کوائف پر حراست میں لیا گیا جن کو بعد میں کوائف مکمل ہونے پر چھوڑ دیا گیا۔پولیس کی طرف سے ہاسٹلوں پر کی گئی کارروائیاں بہت کم ہیں ۔ پولیس ترجمان کا کہنا ہے کہ ہمارے سرچ آپریشن روزانہ کی بنیاد پر جاری ہیں ۔

مزید : لاہور


loading...