نواز شریف کرپشن مخالف قدم اٹھا کر خود پکڑے جائیں گے ،حکمران ٹولہ منی لانڈرنگ کرکے عوام کو غریب کررہاہے:عمران خان

نواز شریف کرپشن مخالف قدم اٹھا کر خود پکڑے جائیں گے ،حکمران ٹولہ منی لانڈرنگ ...
نواز شریف کرپشن مخالف قدم اٹھا کر خود پکڑے جائیں گے ،حکمران ٹولہ منی لانڈرنگ کرکے عوام کو غریب کررہاہے:عمران خان

  


سیالکوٹ (ڈیلی پاکستان آن لائن)چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان نے کہاہے کہ نواز شریف اگر کرپشن کیخلاف قدم اٹھائیں گے تو خود پکڑے جائیں گے ،میاں صاحب کے رہتے کرپشن کاخاتمہ نہیں ہوسکتا ،حکمرانو ں کا ایک چھوٹا سا ٹولہ منی لانڈرنگ کرکے عوام کو غریب کررہاہے ۔

تفصیلات کے مطابق جلسے سے خطاب کرتے ہوئے چیئرمین تحریک انصاف عمران خان کا کہنا تھا کہ نواز شریف !کرپشن صرف آپ کے ذاتی بینک اکاونٹس میں ہوتی ہے ،فیکٹریاں اور فلیٹس بنتے ہیں لیکن غریب اور غریب ہوجاتا ہے۔ حکمرانوں کا کام صرف یہ ہے کہ وہ پیسہ کمائےںاور باہر کے ملک میں بھیجتے رہیں جبکہ بعد میں ضرورت پڑنے پر ملک میں ترقیاقی کاموں کیلئے قرضے لیں اور پھر اسے قرضے کو واپس کرنے کیلئے ٹیکس لگادئیے جاتے ہیں جس کا سیدھا اثر غریب عوام پر پڑتا ہے لیکن ہمیں یہ بات ذہن میں رکھنی چاہیے کہ ہم جتنے قرضے لیتے جائیں اتنا ہی اپنی آزادی کو کھوتے جائیں گے اور جن سے ہم قرض لے رہے ہیں وہ ہمیں ایران سے گیس لینے کی اجازت نہیں دیتے ۔آج ہم بہت اہم موڑ پر کھڑے ہیں کہ ہمیں فیصلہ کرنا ہے کہ ہم نے قرضے لے کر غلا م بنتے رہنا ہے یا اپنے اداروں کو مضبوط کرنا ہے۔انہوں نے کہا کہ وہ قومیں ہی ترقی کرتی ہیں جن کے ادارے مضبوط ہوتے ہیں اور ادارے کرپشن خاتمہ کرنے سے ہی مضبوط ہوتے ہیں لیکن میاں صاحب آپ کرپشن روکنے کیلئے کچھ نہیں کر سکتے کیونکہ اگر کرپشن کا خاتمہ کریں گے تو پہلے خود پکڑے جائیں گے اور اگر نیب کو ٹھیک کریں گے توآپ کے بڑے بڑے دوست پکڑ میں آجائیں گے حالانکہ ان کے اپنے خلاف نیب میں 13 کیسز چل رہے ہیں،لیکن میاں صاحب! آپ کے ہوتے ہوئے کرپشن نہیں رک سکتی ۔ملک کے اداروں میں سے اگر کرپشن ختم ہوجائے سرمایہ کار پیسہ لے کر آتے ہیں جس کی بدولت روزگاری میں اضافہ ہوتا ہے ۔

پاک افغان سرحد پرایک ہزار چیک پوسٹیں قائم کی جا رہی ہیں،افغانستان میں امن قائم ہونے تک پاکستان میں امن نہیں ہو سکتا:سپیکر قومی اسمبلی سردار ایاز صادق

عمران خان نے کہاکہ کے پی حکومت نے فیصلہ کیا کہ سڑکوں بھیک مانگنے والے بچوں کو سڑکوں سے اٹھا کر زمونگ لے کر گئے جہاں ان کو اچھی تعلیم سے آراستہ کیا جارہا ہے ۔تبدیلی ایک ہی سڑک کے 4,4بار فیتے کاٹنے سے نہیں آتی بلکہ پختہ اقدامات کرنے اور انسانوں پر پیسہ خرچ کرنے سے آتی ہے۔ آج سے30 سال قبل بھی لیہ اور تونسہ کے پل کا فیتہ کاٹا گیا تھا اور ایک بار پھر سے وہی عمل دہرایا جارہا ہے ۔انہوں نے کہاکہ مجھے ایک طرف سنہری دور نظر آرہا ہے اور دوسری طرف تباہی کا راستہ دکھائی دے رہا ہے ۔میں نے بچپن سے د یکھا ہے کہ پاکستان تیزی سے ترقی کررہا تھااور اس کی اوسط آمدنی سنگاپور کے برابر تھی لیکن آج 50سال کی کے بعد پاکستان کی اوسط آمدنی 1500سے 200ڈالر ہے اور سنگا پور میں 50,000ارب ڈالر آمدن ہے جس کی وجہ یہ ہے کہ ان کواچھا حکمران ملا اور سنگا پور آج ہر لحاظ سے پاکستان سے بہت آگے جارہا ہے۔

مزید : قومی


loading...