فرانس میں نسل پرست خاتون صدارتی امیدوار میرین لی پین کو بدترین شکت ،ایمانوئل مکرون کم عمر ترین صدر منتخب

فرانس میں نسل پرست خاتون صدارتی امیدوار میرین لی پین کو بدترین شکت ...
فرانس میں نسل پرست خاتون صدارتی امیدوار میرین لی پین کو بدترین شکت ،ایمانوئل مکرون کم عمر ترین صدر منتخب

  


پیرس(ڈیلی پاکستان آن لائن)فرانس میں نسل پرست بائیں بازو کی خاتون صدارتی امیدوار میرین لی پین کو بدترین شکت  سے دوچار کرتے ہوئےاعتدال پسند ایمانوئل مکرون فرانس کے کم عمر ترین صدر منتخب ہو گئے ہیں ۔

جمائمہ نے اپنے چھوٹے بیٹے کی ایسی تصاویر عمران خان کو بھیج دیں کہ دیکھ کر ہی ان کا رنگ بدل گیا، آپ بھی دیکھ کر دانتوں تلے انگلیاں دبا لیں گے

بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق فرانس کے صدارتی انتخابات کے دوسرے اور حتمی مرحلے میں مکرون نے 66 جبکہ ان کی حریف  لی پین نے محض 34 فیصد  ووٹ حاصل کئے،پہلے مرحلے میں 11 امیدواروں کے درمیان مقابلہ بے نتیجہ رہا تھا اور کوئی بھی امیدوار صدارت کے لئے لازمی 50 فیصد  ووٹ حاصل نہیں کرسکا تھا، پہلے مرحلے میں مکرون کو لی پین پر معمولی برتری حاصل تھی، پہلے مرحلے میں اول اور دوئم نمبر پر آنے والے امیدواروں کے درمیان دوبارہ مقابلہ ہوا، جس میں مکرون نے واضح برتری حاصل کرلی، مکرون کے حامیوں کا پیرس کی سڑکوں پر جشن جبکہ لی پین نے اپنی شکست تسلیم کرتے ہوئے  صدر منتخب ہونے پر ایمانوئل میکرون کو ٹیلیفون کر کے مبارکباد بھی دی ہے۔

واضح رہے کہ فرانس کے 25ویں صدر منتخب ہونے والے ایما نوئل میکرون کا ارادہ سب کو ساتھ لے کر چلنا ہے،وہ متحدہ یورپ کے ساتھی بھی ہیں۔دوسری جانب  لی پین اپنے شدت پسند خیالات کے باعث لوگوں میں پسند نہیں کی جاتی ،وہ پیرس میں بسنے والے مسلمانوں کے سخت خلاف ہیں اور انہیں بنیادی سہولتیں فراہم کرنے کے حق میں بھی نہیں ہیں۔برطانیہ کی یورپی یونین سے علیحدگی اور امریکہ میں ڈونلڈ ٹرمپ کے انتخاب کے بعد فرانس کے انتخابات یورپی یونین کے مستقبل کے لئے نہایت اہمیت کے حامل تھے کیونکہ شکست خوردہ صدارتی امیدوار لی پین نے جیت کی صورت میں یورپی یونین سے علیحدگی کا اعلان کر رکھا تھا۔

مزید : بین الاقوامی


loading...