قانون میں آئی ایم ایف کے تنخواہ دار کو گورنر سٹیٹ بینک بنانے کی اجازت نہیں : بلاول 

  قانون میں آئی ایم ایف کے تنخواہ دار کو گورنر سٹیٹ بینک بنانے کی اجازت نہیں : ...

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

اسلام آباد (سٹاف رپورٹر )پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے گورنر سٹیٹ بینک کی تبدیلی کیخلاف بھرپور مہم چلانے کا اعلان کرتے ہوئے کہا ہے کہ ملکی معاشی خودمختاری پر سمجھوتہ کیا جا رہا ہے۔ پاکستان کی معاشی تباہی کے دنیا پر منفی اثرات مرتب ہوں گے۔ صرف پاکستان کوہی نہیں آئی ایم ایف کو بھی پاکستان کی ضرورت ہے، بلاول بھٹو زر داری نے کہاہے کہ اچانک وزیرخزانہ، چیئرمین ایف بی آر اور گورنر سٹیٹ بنک کی تبدیلیاں سنگین مسئلہ ہے،حکومت میں قائدانہ صلاحیت نہیں ،اب آئی ایم ایف فیصلہ کرے گا کہ وزیرخزانہ، چیئرمین ایف بی آر اور گورنر اسٹیٹ بنک کون ہوگا؟ اس طرح کا نظام نہیں چلے گا،موجودہ حکومت آئی ایم ایف کی ہر بات مان رہی ہے،عمران خان ٹیپو سلطان کی بات کرتے تھے ،اس وقت پاکستان غلام بن چکا ہے ،پارلیمنٹ اور پارلیمنٹ کے باہر ان مسائل کو بھرپور طریقے سے اٹھائیں گے،حکومت کے ظلم اور جبر کو نقاب کرتی رہیں گے۔سٹیٹ بینک کے گورنر کی مدت ملازمت تین سال ہوتی ہے، گورنر اسٹیٹ بینک کو اس طرح زبردستی نہیں ہٹایا جا سکتا۔آئی ایم ایف کے تنخواد دار کو اسٹیٹ بینک کا سربراہ بنانے کی کوئی قانون اجازت نہیں دیتا۔پیر کے روز پارلیمنٹ ہاﺅس میں اخبار نویسوں سے گفتگو کرتے ہوئے چیئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ وزیر خزانہ، چیئرمین ایف بی آر اور گورنر اسٹیٹ بینک کی اچانک تبدیلیاں سنگین مسئلہ ہے، حکومت میں قائدانہ صلاحیت نہیں ہے، لگ رہا ہے ہم معاشی خودمختاری پر سمجھوتا کررہے ہیں۔چیئرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری نے رانا تنویر کو چیئرمین پبلک اکاو¿نٹس کمیٹی نامزد کرنے پر تحفظات کااظہار کیا ہے ۔چیئرمین پیپلز پارٹی نے اپنے بیان میں کہا کہ چیئرمین پبلک اکاو¿نٹس کمیٹی (پی اے سی) کے معاملے پر اب (ن) لیگ کےساتھ کھڑے نہیں ہونگے۔ انہوںنے کہاکہ شہباز شریف کو چیئرمین پی اے سی بنانے میں پیپلز پارٹی نے اہم کردار ادا کیا تھا اور اگر مسلم لیگ (ن)کو رانا تنویر کا فیصلہ کرنا ہی تھا تو پہلے پیپلز پارٹی کو اعتماد میں لینا چاہیے تھا۔بلاول بھٹو نے کہا کہ روایت کے مطابق چیئرمین پی اے سی اپوزیشن سے ہونا چاہیے اور اسی روایت کو برقرار رکھنے کے لیے مسلم لیگ (ن )کا ساتھ دیا تھا۔
بلاول 


بلاول 


 اسلام آباد (سٹاف رپورٹر) سابق صدر آصف علی زر داری نے کہاہے اب تو لگتا ہے آئی ایم ایف کا آفس پاکستان شفٹ ہورہاہے،پی سی اے کی چیئر مین شپ پر مشاورت کرینگے ۔ پیر کو میڈیا سے بات چیت کے دور ان صحافی نے سوال کیا کیا چیئرمین پی اے سی کی تبدیلی پر آپ سے مشاورت کی گئی ہے؟ توانہوں نے جواب دیا خورشید شاہ سے ضرور کی ہوگی، مجھ سے کیوں کریں گے۔ صحافی نے سوال کیا آئی ایم ایف کے گورنر کی تقرری کے معاملے پر کیا کہیں گے؟ آصف زر داری نے جواب دیا آئی ایم ایف کا آفس تو اب لگتا ہے پاکستان شفٹ ہو رہا ہے، آئی ایم ایف کے لوگ اس طرح آکے اسٹیٹ بنک میں بیٹھیں ہوں گے تو کیا ہم ملک چلائیں گے؟ ۔ رانا تنویر کی حمایت کرنے سے متعلق سوال کے جواب میں آصف زر داری کا کہنا تھا رانا تنویر بندہ تو اچھا ہے، دیکھتے ہیں،تاہم پی اے سی کی چیئرمین شپ پر مشاورت کر یں گے۔
زرداری 

مزید :

صفحہ اول -