عبدالعلیم خان کیخلاف ریفرنس کب تک تیار ہوگا ،ہائیکورٹ 90دن درکار ،نیب

 عبدالعلیم خان کیخلاف ریفرنس کب تک تیار ہوگا ،ہائیکورٹ 90دن درکار ،نیب

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


لاہور(نامہ نگار خصوصی ) لاہور ہائی کورٹ کے مسٹر جسٹس علی باقرنجفی اور مسٹر جسٹس سردارمحمد نعیم پرمشتمل ڈویژن بنچ نے تحریک انصاف کے رہنما عبدالعلیم خان کی درخواست ضمانت پر نیب سے دوٹوک جواب طلب کرلیاہے کہ عبدالعلیم خان کے خلاف ریفرنس دائر کیا جارہاہے یا نہیں۔ جسٹس علی باقر نجفی نے ریمارکس دیئے کہ نیب کے ملزموں کو ناگزیرحالات کے سوا ضمانت نہیں مل سکتی،اس سلسلے میں سپریم کورٹ کا فیصلہ آچکاہے ،ریفرنس کے دائر ہونے تک آپ انتظار کر لیں ۔عدالت نے نیب کے تفتیشی افسر سے کہا کہ ابھی تک ریفرنس دائر ہونے کی بابت واضح طور پر نہیں بتایا گیا، اگر آپ ملزم کے خلاف ریفرنس دائر کرنے جا رہے ہیں تو پھر ہم اور انداز میں کیس کو سنیں گے، جس پرتفتیشی افسر نے کہا کہ تحقیقات مکمل ہو رہی ہیں، عبوری ریفرنس دائر کیا جائے گا مگر مکمل ریفرنس کے لئے وقت درکار ہو گا، جسٹس سردار محمد نعیم نے تفتیشی افسر سے پوچھا تحقیقات میں کیا پیش رفت ہے؟ جسٹس علی باقر نجفی نے استفسار کیا آپ نے ملزم کیخلاف کافی مواد اکٹھا کر لیا ہے؟ جس پر تفتیشی افسر نے کہا جی کافی ثبوت عبدالعلیم خان کے خلاف اکٹھے کر لئے ہیں ،تفتیشی افسر نے کہا کہ ریفرنس تیاری کے مراحل میں ہے اور جلد ہی تفتیشی رپورٹ مکمل کرلی جائے گی ،حتمی چالان 90دن میں جمع کرا دیا جائے گا،عبدا لعلیم خان کے وکیل بیرسٹر علی ظفر نے دلائل دیئے کہ نیب اب تک ان کے خلاف کوئی الزام ثابت نہیں کرسکا، ضمانت کی درخواست منظور کر لی جائے،دو رکنی بنچ نے علیم خان کی ضمانت پر رہائی کی درخواست پر کارروائی 13 مئی تک ملتوی کردی ۔
ریفرنس

مزید :

صفحہ آخر -