سٹیٹ بینک آئی ایم ایف کے حوالے ،ملکی معیشت داﺅپر لگادی گئی ،سراج الحق

سٹیٹ بینک آئی ایم ایف کے حوالے ،ملکی معیشت داﺅپر لگادی گئی ،سراج الحق

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


لاہور( نمائندہ خصوصی) امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے اپنے ایک بیان میں آئی ایم ایف کے سابق ملازم باقر رضا کو اسٹیٹ بنک کا گورنر بنانے پر اپنے سخت تحفظات کا اظہارکیاہے اور کہاہے کہ ملکی معیشت کو براہ راست آئی ایم ایف کے حوالے کردیا گیاہے اور اسٹیٹ بنک اور ایف بی آر جیسے انتہائی حساس قومی مالیاتی اداروں کو آئی ایم ایف کی دسترس میں دے دیا گیاہے ۔ سینیٹر سراج الحق نے کہا کہ بہت شور تھاکہ کیا ہوگا کیا ہوگا اور پھر یکدم آئی ایم ایف سے معاہدہ ہوگیا اور ساتھ ہی آئی ایم ایف کے ملازم کو استعفیٰ دلوا کر اسٹیٹ بنک کا گورنر لگادیا گیا ۔ گزشتہ تین دن میں کی جانے والی تعیناتیوں پر پوری قوم تشویش میں مبتلا ہے ۔انہوں نے کہاکہ آئی ایم ایف اور ورلڈ بنک کا سابق ملازم اپنے اداروں کے اشاروں پر چلتے ہوئے ان کے مفادات پورے کرے گا ، انہوںنے کہاکہ آئی ایم ایف روپے کی قدر کو مزید کم کرنے پر دباﺅ ڈال رہاہے جس سے ملک پر سینکڑوں ارب روپے کا قرضہ بڑھ جائے گا ۔ حکومت نے اسٹیٹ بنک کو آئی ایم ایف کے حوالے کر کے ملکی معیشت کو داﺅ پر لگا دیا ہے ۔ اب حفیظ شیخ ،باقررضا اور احمد مجتبیٰ میمن پر مشتمل ٹرائیکا آئی ایم ایف کے مفادات کا تحفظ کرے گا ۔دریں اثناءامیر جماعت اسلامی نے رمضان المبارک کے حوالے سے قوم کے نام پیغام میں کہاہے کہ رمضان المبارک اللہ تعالیٰ کی رحمتوں ، بخششوں اور جہنم سے آزادی کا پیغام لے کر ایک بار پھر ہم پر سایہ فگن ہے ۔ ہمیں رمضان المبارک کی ایک ایک ساعت اور گھڑی کو غنیمت جانتے ہوئے اس طرح گزارنا چاہیے کہ ہمارا رب ہم سے راضی ہو جائے ۔ رمضان المبارک باہمی محبت و اخوت ، بھائی چارے ، ایثار و قربانی ، ہمدردی اور غمگساری کامہینہ ہے ۔ہمیں اپنے پڑوس میں رہنے والے حاجت مندوں ، مساکین ، بیواﺅں اور یتیموں کی دست گیری کرتے ہوئے ان کی ضروریات کا خیال رکھناچاہیے اور رمضان کی خوشیوں اور برکتوں میں ان کو شامل کرناچاہیے۔سینیٹر سراج الحق نے کہاکہ ہم نے نام نہاد جمہوریت اور بدترین آمریت کو تو بار بار گلے لگایا مگر جس نظام کے لیے پاکستان بنایا تھا اس سے بے وفائی اور روگردانی کرتے ہوئے اسے پس پشت ڈالے رکھا جس کی وجہ سے آج ملک و قوم اللہ کے غضب کا شکار اور مسائل کی دلدل میں پھنسے ہوئے ہیں ۔ ہمیں اس ماہ مبارک میں سچے دل سے اللہ سے توبہ و استغفار کرتے ہوئے ملک میں نظام مصطفی کے نفاذ کے عہد کو پورا کرنے کے لیے جدوجہد کو تیز کرناہوگا تاکہ ملک کو مسائل کی دلدل سے نکال کر ترقی و خوشحالی کی شاہراہ پر گامزن کیا جاسکے ۔
سراج الحق

مزید :

صفحہ آخر -