چودھر ی برادران نے زائد اثاثہ جات انکوائری دوبارہ کھولنے کا نیب اقدام چیلنج کردیا

    چودھر ی برادران نے زائد اثاثہ جات انکوائری دوبارہ کھولنے کا نیب اقدام ...

  

لاہور(نامہ نگارخصوصی)تحریک انصاف حکومت کے سیاسی اتحادی اور مسلم لیگ کے صدر چودھری شجاعت حسین اور چودھری پرویز الٰہی نے اپنے خلاف 19سال پرانے مقدمات دوبارہ کھولنے پر چیئرمین نیب کے اختیارات کو لاہور ہائیکورٹ میں چیلنج کردیا ہے۔ درخواست میں چیئرمین نیب جاوید اقبال سمیت دیگر کو فریق بنایا گیا ہے۔ چودھری شجاعت حسین اور سپیکرپنجاب اسمبلی چودھری پرویز الٰہی نے نیب کے خلاف دائر اپنی درخواستوں میں موقف اختیار کیا ہے کہ نیب کے کردار اور تحقیقات کے غلط انداز پر عدالتیں فیصلے بھی دے چکی ہیں،نیب سیاسی انجینئرنگ کرنے والاادارہ ہے،چیئرمین نیب نے ہمارے کے خلاف 19سال پرانے معاملے کی دوبارہ تحقیقات کا حکم دیا جبکہ نیب نے 19سال قبل آمدنی سے زائد اثاثہ جات کی مکمل تحقیقات کیں مگر نیب کو کچھ حاصل نہیں ہوا،چیئرمین نیب کو 19سال پرانی اور بند کی جانے والی انکوائری دوبارہ کھولنے کا اختیار نہیں،درخواستوں میں چودھری خاندان کی پاکستان اور ملکی سیاست کے لئے خدمات کا بھی ذکر کیا گیا،درخواست گزاروں کا موقف ہے کہ ہمارا سیاسی خاندان ہے اور ہمیں سیاسی طور انتقام کا نشانہ بنایا جاتا رہا ہے،بدقسمتی سے سیاستدانوں کو سیاسی انتقام کا نشانہ بنانا نو آبادیاتی نظام کا ورثہ ہے،چودھری برادران کی جانب سے استدعا کی گئی ہے کہ نیب کی جانب سے انیس برس پرانے آمدنی سے زائد اثاثہ جات کی انکوائری دوبارہ کھولنے کے اقدام کوغیرقانونی قرار دیا جائے۔

اقدام چیلنج

مزید :

صفحہ اول -