ویز واش کی جانب سے مساجد کو ڈس انفیکیٹ‘ سینی ٹائزکرنیکا سلسلہ شروع

      ویز واش کی جانب سے مساجد کو ڈس انفیکیٹ‘ سینی ٹائزکرنیکا سلسلہ شروع

  

ملتان (سپیشل رپورٹر)اس وقت جب پاکستان سمیت پوری دنیا کورونا وائرس کی وجہ سے پریشان ہے اور اس وائرس سے بچاؤ کیلئے احتیاطی تدابیر کے تحت انسانوں کو ایک دوسرے سے الگ رہنے کا کہا جارہا ہے تو اس وائرس کی وجہ سے مساجد بھی متاثر ہوئی ہیں کیونکہ مساجد میں بھی نماز اور اس وقت رمضان المبارک ہے تو سحری‘ افطاری اور تراویح کے وقت لوگوں کا رش ہوتا ہے۔ حکومت کی جانب سے ایس او پیز جاری کئے گئے کہ ان پر عملدرآمد کرکے مساجد میں نمازیں ادا کی(بقیہ نمبر31صفحہ7پر)

جاسکتی ہیں۔مساجد میں جانے والوں کو پریشانی کا سامنا تھا۔اس پریشانی کو دور کرنے کیلئے مشہور کمپنی ویز واش نے مساجد کو جراثیم سے پاک کرکے آباد کرنے کا سلسلہ شروع کیا ہے۔ویز واش کمپنی کا ماٹو بھی یہی ہے کہ صفائی نصف ایمان ہے۔ہمارے دین میں بھی ایمان کا آدھا حصہ صفائی کو قرار دیا گیاہے اور اسی کے پیش نظر ویز واش کی جانب سے مساجد کو ڈس انفیکٹ اور سینی ٹائز کرنے کا سلسلہ شروع کیا گیا ہے۔ مساجد کیلئے ویز واش کمپنی کی جانب سے مفت میں سپرے فراہم کیاجارہا ہے۔ اس حوالے سے گفتگوکرتے ہوئے ویز واش کے چیف ایگزیکٹو آفیسر شیخ احسن رشید نے بتایاکہ یہ سپرے ڈبلیوایچ او کی جانب سے دی گئی ہدایات کی روشنی میں بنایا گیا ہے۔کیونکہ ہمارے یہاں کلورین ملا پانی استعمال کیاجارہا ہے جوکہ انسانی جسم اور صحت کیلئے مضر صحت ہے اور ڈبلیو ایچ او نے اس کے استعمال سے گریز کا مشورہ دیا ہے۔ ہم نے جو پراڈکٹ تیار ہیں وہ انسانی جسم اور صحت کیلئے مضر نہیں ہیں۔ ویز واش کی جانب سے تین پراڈکٹ بنائے گئے ہیں جو ڈس انفیکشن سے متعلق ہیں۔ ایک سپرے جسم کو ڈس انفیکٹ کرتا ہے‘ دوسرا پراڈکٹ مختلف جگہوں پر استعمال کیا جاسکتا ہے۔ تیسرا پراڈکٹ فرش کو ڈس انفیکٹ کرنے کیلئے بنایا گیا ہے۔ اس میں سوڈیم ہائپو کلورائیڈ کا استعمال کیا گیا ہے۔ ڈبلیو ایچ او کی جانب سے دو فارمولوں کے تحت تیار کئے گئے سپرے کو کورونا وائرس کے خاتمہ کیلئے مؤثر قرار دیا گیا ہے اور اسی ایک فارمولا کے تحت ہماری کمپنی نے یہ سپرے تیار کئے ہیں۔ انہوں نے بتایاکہ مساجد اللہ کا گھر ہیں اور اس وقت رمضان المبارک ہے تو ہماری کمپنی کی جانب سے مساجد کیلئے یہ پراڈکٹ مفت دی جائیں گی تاکہ ان مساجد کو جراثیم سے پاک کریں۔ انہوں نے بتایاکہ ایک بار ڈس انفیکٹ کرنے کے 8گھنٹے بعد تک وہ جگہ جراثیم سے پاک ہوجاتی ہے۔ حکومتی ایس او پیز کے مطابق دو طرح کی ڈس انفیکشن ہونی چاہئے ایک تو مسجد کے اندر کو ڈس انفیکٹ کیاجائے مساجد کے ہال کمرے اور صحن کو ڈس انفیکٹ کردیاجائے اس کے بعد جو نمازی آتے ہیں ان کے جسم پر سپرے کیاجائے وہ لوگ بھی جراثیم سے محفوظ رہ سکتے ہیں۔ شیخ احسن رشید نے مزید کہا کہ ہمارے ادارے کی جانب سے پورے جنوبی پنجاب میں جہاں مساجد ہوں وہاں کے لوگ یہ پراڈکٹ لینا چاہتے ہیں تو ہم ان کو مفت میں دیں گے۔) ویز واش کی جانب سے مساجد کوجراثیم سے پاک کرنے کے اقدام کو عوامی‘دینی حلقوں اور نمازیوں کی جانب سے سراہا جارہا ہے۔ویز واش کی جانب سے مساجد اور نمازیوں کو ڈس انفیکٹ کرنے کیلئے مختلف مساجد کو سپرے فراہم کردیئے گئے جس پر ان مساجد کے نمازیوں نے ویز واش کمپنی اور چیف ایگزیکٹو آفیسر شیخ احسن رشید اور پوری ٹیم کا شکریہ ادا کیا ہے کہ ان کے اس اقدام کی وجہ سے مساجد آباد ہوں گی اور حکومتی ایس او پیز پر عمل کرکے وہاں پر نمازی نماز ادا کرسکتے ہیں۔ ایک سروے میں مختلف لوگوں نے گفتگوکرتے ہوئے کہا کہ اللہ تعالیٰ اپنے نیک بندوں سے ایسے کام لیتے ہیں جو کام ویز واش کمپنی کررہی ہے اس کی وجہ سے لوگ اب مطمئن ہوکر مساجد میں نماز ادا کریں گے۔ کیونکہ مسجد اور آنے والے نمازیوں کو ڈس انفیکٹ کرنے سے جراثیم کا خاتمہ ہوگا اور لوگ بہتر انداز سے مساجد میں آکر نماز ادا کرسکیں گے۔ ویز واش کی جانب سے فراہم کئے جانیوالے سپرے انسانی جسم اور صحت کیلئے مضر نہیں ہیں ان سپرے کی خوشبو بھی اچھی ہے۔

سلسلہ

مزید :

ملتان صفحہ آخر -