لاک ڈاؤن،لاہور میں جرائم کی وارداتیں 80 فیصدتک کم

لاک ڈاؤن،لاہور میں جرائم کی وارداتیں 80 فیصدتک کم

  

لا ہو ر (کر ائم رپو رٹر) لاک ڈاؤن اور شام 5 بجے دکانیں،مارکیٹیں بند ہونے کے سبب ایک ماہ کے دوران کرائم کی وارداتوں میں واضح کمی ہوئی،جائزہ رپورٹ جاری کر دی گئی۔ ترجمان لاہور پولیس رانا عا رف کے مطابق جزوی لاک ڈاوؤن کے دوران ڈکیتی اور راہزنی کی وارداتوں میں پولیس ہیلپ لائن 15 پر موصول ہونے والی کالز ریکارڈ اور ڈیٹا کے مطابق 39 فیصد کمی ہوئی۔ روڈ اینڈ شاپ روبری کیسز میں 42 فیصد کمی دیکھنے میں ڈولفن اور پیرو فورس کی طرف سے موثر پیٹرولنگ اور ناکہ جات کے باعث شہر کی شاہراوں پر روڈ سنیچنگ کی وارداتوں میں 37 فیصد کمی ہوئی۔لاک ڈاوؤن کے دوران قتل کے کیسز میں 80 فیصد کمی دیکھنے میں آئی ہے۔

جبکہ گاڑی چھیننے کی وارداتوں میں 30 فیصد گاڑی چوری کی وارداتوں میں 29 فیصد ہوئی اور جزوی لاک ڈاوؤن کے دوران چوری کی وارداتوں میں 33 فیصد کمی ہوئی ہے۔ رپورٹ کے مطابق جزوی لاک ڈاوؤ ن کے دوران گھریلو تشدد کے واقعات میں 25 فیصد اضافہ ہوا ہے جبکہ گلی محلوں میں معمولی لڑائی جھگڑوں میں 12 فیصد اضافہ دیکھنے میں آیا ہے۔ ترجمان لاہور پولیس کا کہنا تھا کہ لاہور پولیس اپنے باسیوں کی سیفٹی اور سکیورٹی کو یقینی بنائے ہوئے ہے۔ امن و امان اورقانون شکن عناصر کے خلاف سخت کریک ڈان جاری رہے گا۔

مزید :

علاقائی -