سکول تنظیموں کاکم فیس والے اداروں کو فوری ریلیف دینے کا مطالبہ

سکول تنظیموں کاکم فیس والے اداروں کو فوری ریلیف دینے کا مطالبہ

  

  

چوہنگ (ڈاکٹر ندیم آصف سے) آل پاکستان پرائیویٹ سکولز ایسوسی ایشن APPSA کے مرکزی صدر میاں شبیر احمد ہاشمی نے کہا کہ حکومت کا 60فیصد تعلیمی بوجھ پرائیویٹ سکولز نے اٹھایا ہوا ہے مگر مشکل کی اس گھڑی میں پرائیویٹ سکولز کے ساتھ سوتیلی ماں جیسا سلوک کیا جارہاہے۔کم فیس والے پرائیویٹ سکولز جب تک کھلتے نہیں وہاں کے والدین فیس ادا نہیں کرتے۔زیادہ تر سکول عمارتیں کرائے پر ہوتی ہیں اس وقت سکول مالکان کرایا مانگ رہے ہیں اساتذہ تنخواہیں مانگ رہے ہیں تمام بلز ادا ہونے ہیں مگر حکومت پالیسی مرتب کرتے وقت بھاری فیسیں وصول کرنے والے پرائیویٹ سکولز کو مدنظر رکھتے ہے مگر ان سکولز کی تعداد2فیصد ہے۔کم فیس لینے والے سکولز کو اس وقت حکومت کی طرف سے ریلیف ملنا چاہیے کم از کم بلڈنگ کے کرائے حکومت ادا کرے یا آدھے معاف کروائے۔کرونا تکلیف کی اس گھڑی اورماہ مقدس رمضان المبارک اورعید کی آمد آمد ہے لیکن حکومت نے بے یارو مدد گار چھوڑ دیا ہے۔لاکھوں اساتذہ اور ملازمین کے خاندان فاقوں پر مجبور ہیں۔ہم حکومت وقت سے مطالبہ کرتے ہیں کہ کم فیس پرائیویٹ سکولز کیلئے فوری طور پر ریلیف کا اعلان کیاجائے اور سکولز کھولنے کی اجازت دی جاے۔پیف اور پیما سکولز کو گزشتہ تین ماہ سے حکومت کی طرف سے ادائیگیاں نہیں کی گئیں فوری تمام ادائیگیاں کی جائیں۔ کل کفن پہن کر پنجاب اسمبلی جائیں گے اور خصوصی یاداشت جمع کرائیں گے۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -