مقبوضہ کشمیر، بھارتی فوج کی فائرنگ سے مزید 2نوجوان شہید، عوام سراپا احتجاج 

مقبوضہ کشمیر، بھارتی فوج کی فائرنگ سے مزید 2نوجوان شہید، عوام سراپا احتجاج 

  

سری نگر(آئی این پی) مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوج کی ریاستی دہشت گردی کا سلسلہ جاری، مزید دو کشمیری نوجوانوں کو شہید کردیا گیا۔کشمیر میڈیا سروس کے مطابق جنت نظیر وادی کشمیر میں ماہ رمضان کے دوران بھی قابض بھارتی فوج کی جنونیت میں کمی واقع نہیں ہوئی، بنیادی انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزی جاری ہے اور مذہبی آزادی پر قدغن لگائی گئی ہے۔قابض بھارتی فوج نے ضلع پلوامہ میں نام نہاد سرچ آپریشن کے دوران مزید 2 کشمیری نوجوانوں ریاض نیکو اور عادل احمدکو گولیاں مار کر شہید کردیا گیا۔ سرچ آپریشن کے دوران داخلی اور خارجی راستوں کو بند کردیا گیا اور گھر گھر تلاشی کے دوران چادر و چار دیواری کے تقدس کو پامال کیا گیا۔بھارت نواز کٹھ پتلی انتظامیہ نے روایتی ہٹ دھرمی کا مظاہرہ کرتے ہوئے شہید ہونے والے نوجوانوں کو عسکریت پسند ثابت کرنے کی کوشش کرتے ہوئے کہا کہ نوجوان مسلح تھے اور پو لیس کو مطلوب تھے جو دوطرفہ فائرنگ کے نتیجے میں ہلاک ہوئے۔علاقہ مکینوں اور اہل خانہ نے کٹھ پتلی انتظامیہ کے بیان کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ نوجوانوں کو گرفتار کرنے کے بعد ماورائے عدالت قتل کیا گیا ہے اور لاشیں بھی حوالے نہیں کی گئی ہیں۔ علاقہ مکینوں نے بھارتی فوج کی جارحیت کے خلاف احتجاج بھی کیا۔دوسری طرف حریت رہنماؤں نے عوام سے اپیل کی ہے کہ نوجوانوں کی نسل کشی کے بعد سڑکوں پر نکل آئیں، کیونکہ قابض بھارتی فوج آپریشن کی آڑ میں کشمیریوں کی نسل کشی میں مصروف ہے۔خبر رساں ادارے کے مطابق کشمیری حریت رہنماؤں محمد اشرف، عمر عادل ڈار، یاسمین راجہ، محمد یوسف نقاش، مسلم لیگ، پیپلز لیگ، طلبہ سمیت دیگر بڑی تعداد نے شہید ہونے والے ریاض نیکو اور عادل احمد کو بھی خراج تحسین پیش کیا۔

مقبوضہ کشمیر

مزید :

صفحہ اول -