سکول کب تک بند رہیں گے اور امتحانات ہوں گے یا نہیں ؟ حکومت نے اعلان کر دیا ، سب سے اہم خبر آ گئی

سکول کب تک بند رہیں گے اور امتحانات ہوں گے یا نہیں ؟ حکومت نے اعلان کر دیا ، سب ...
سکول کب تک بند رہیں گے اور امتحانات ہوں گے یا نہیں ؟ حکومت نے اعلان کر دیا ، سب سے اہم خبر آ گئی

  

اسلام آبا د(ڈیلی پاکستان آن لائن )وزیراعظم عمران خان نے ہفتے کے روز سے مرحلہ وار لاک ڈاﺅ ن کھولنے کا اعلان کر دیاہے جبکہ قومی رابطہ کمیٹی میں سکولوں کی بندش سے متعلق بھی اہم فیصلہ کیا گیاہے ۔

تفصیلات کے مطابق اجلاس کے بعد میڈیا کو بریفنگ دیتے ہوئے وزیر تعلیم شفقت محمود نے بتایا کہ تعلیمی ادارے 31 مئی تک بند کیے گئے تھے جس میں اب توسیع کر دی گئی ہے اور اب یہ مزید 15 جولائی تک بند رہیں گے اس میں ڈیڑھ ماہ کا اضافہ کر دیا گیاہے ۔

انہوں نے اعلان کرتے ہوئے کہا کہ جتنے بھی بورڈز کے امتحانات تھے وہ ہم نے کینسل کر دیئے ہیں ، یہ امتحانات ملتوی نہیں بلکہ ختم کر دیئے گئے ہیں ۔شفقت محمود نے تفصیلات فراہم کرتے ہوئے کہا کہ نویں ، دسویں ، گیارویں ، اور بارویں کے امتحانات نہیں ہو گے بلکہ گزشتہ سال کے نتیجے کے مطابق ان کو اگلی کلاسوں میں بھیجا جائے گا ، یعنی 11 ویں کے رزلٹ کا موجود ہوگا جس پر انہیں 12 سے پروموٹ کیا جائے گا اور وہ یونیورسٹی میں جا سکیں گے ۔شفقت محمود کا کہناتھا کہ اگر امحان ہالز میں ہوتے تو یہ خطرہ تھا کہ وہاں پر کورونا تیزی کے ساتھ پھیلتا اس لیے بچوں کی صحت کیلئے یہ دو بڑے فیصلے کیے گئے ہیں ۔

دوسری جانب حماد اظہر کا کہنا تھا کہ اجلاس میں فیصلہ کیا گیاہے کہ ہفتے کے روز سے جو انڈسٹری کھولی جائے گی ان سے تعلق رکھنے والی دکانیں بھی کھولی جائیں گی ، انہوں نے کہا کہ پائپ ملز ، پینٹ بنانے والی فیکڑیاں اور یونٹس، سیرامک ، سینیٹری اور ٹائلز ، الیکٹرک کیبلز ، سٹیل اینڈ ایلومینم انڈسٹری کو کھولنے پر اتفاق کر لیا گیاہے ، اس کے علاوہ ہارڈ ویئر سٹورز کو بھی کھولاجائے گا ۔

حماد اظہر کا کہناتھا کہ پاکستان کے دیہاتوں میں جو دکانیں ہیں انہیں بھی کھولنے کی اجازت دیدی گئی ہے جبکہ محلوں میں موجود چھوٹی مارکیٹں بھی ہفتے کے روز سے کھل جائیں گی ، حماد نے واضح کرتے ہوئے کہا کہ دکانیں کھولنے کا دورانیہ صبح سحری کے بعد سے شام پانچ بجے تک ہوگا ، ہفتے میں دو دن مکمل چھٹی ہو گی اس دن تمام کاروبار بند ہوں گے جبکہ صرف میڈیکل سٹورز اور ضروری اشیاءکی دکانیں کھلیں گی ۔

مزید :

قومی -