وہ گاﺅں جہاں 10 برس بعد پہلی مرتبہ لڑکے کی پیدائش، 10 برس تک مائیں صرف لڑکیوں کو ہی جنم دیتی رہیں

وہ گاﺅں جہاں 10 برس بعد پہلی مرتبہ لڑکے کی پیدائش، 10 برس تک مائیں صرف لڑکیوں ...
وہ گاﺅں جہاں 10 برس بعد پہلی مرتبہ لڑکے کی پیدائش، 10 برس تک مائیں صرف لڑکیوں کو ہی جنم دیتی رہیں

  

وارسا(مانیٹرنگ ڈیسک) پولینڈ کے ایک گاﺅں میں 10سال بعد لڑکے کی پیدائش کا جشن کورونا وائرس کی نذر ہو گیا۔ میل آن لائن کے مطابق پولینڈ کے جنوبی علاقے میں واقع اس گاﺅں کا نام ’Miejsce Odrzanskie‘ ہے جہاں 2010ءکے بعد کوئی بھی بیٹا پیدا نہیں ہوا۔ ان دس سالوں میں جتنی خواتین کے ہاں اولاد ہوئی، سبھی کے ہاں بیٹیاں پیدا ہوئیں۔ 10ماہ قبل گاﺅں کے میئر نے اعلان کیا تھا کہ جس جوڑے کے ہاں بیٹا پیدا ہو گا اسے انعام دیا جائے گا۔

بالآخر اینا میلیک نامی خاتون کے ہاں گزشتہ دنوں بیٹے کی پیدائش ہوئی ہے جس پر پورے گاﺅں میں خوشی کی لہر دوڑ گئی لیکن میئر کا کہنا ہے کہ ان کی آفر اپنی جگہ موجود ہے لیکن کورونا وائرس کی وجہ سے فی الحال تقریب کا انعقاد نہیں کیا جا سکتا اور تب تک کے لیے انعام بھی موخر کیا جاتا ہے۔ اینا کے ہاں بچے کی پیدائش کے وقت پیچیدگی کی وجہ سے اس کی سرجری بھی کرنی پڑی تھی اور اس کی جان بمشکل بچی۔ اس پر اینا کا کہنا ہے کہ یہ دہرا معجزہ ہے، ایک طرف میری جان بہت مشکل سے بچی اور دوسرے گاﺅں میں 10سال بعد کسی کے ہاں بیٹا پیدا ہوا ہے۔واضح رہے کہ اس گاﺅں کی آبادی 300نفوس پر مشتمل ہے۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -