24 سال قبل قتل کرنے والا شخص بالآخر کورونا وائرس کی وجہ سے قانون کی گرفت میں آگیا

24 سال قبل قتل کرنے والا شخص بالآخر کورونا وائرس کی وجہ سے قانون کی گرفت میں ...
24 سال قبل قتل کرنے والا شخص بالآخر کورونا وائرس کی وجہ سے قانون کی گرفت میں آگیا

  

بیجنگ(مانیٹرنگ ڈیسک) 24سال قبل ایک آدمی کو قتل کرنے والا شخص بالآخر کورونا وائرس کی وجہ سے گرفتار ہو گیا۔ 7نیوز آسٹریلیا کے مطابق شی نامی اسی شخص نے جون 1996ءمیں جنوبی مغربی صوبے گینسو میں واقع اپنے گاﺅں میں ایک آدمی کو قتل کر دیا تھا اور فرار ہو گیا تھا۔اس وقت اس کی عمر 24سال تھی اور وہ آج تک پکڑا نہیں گیا تھا۔

رپورٹ کے مطابق چینی حکومت نے کورونا وائرس کے مریضوں کا سراغ لگانے کے لیے ایک نئی ایپلی کیشن تیار کی ہے جس کا نام ’کورونا وائرس ہیلتھ ایپ‘ رکھا گیا ہے۔ چین کے ہر شہری پر لازم قرار دیا گیا ہے کہ وہ اپنے فون میں اس ایپلی کیشن کو انسٹال کرے۔ جس شخص کے فون میں یہ ایپلی کیشن انسٹال نہیں ہوتی اسے نہ تو ملازمت مل سکتی ہے اور نہ ہی وہ شاپنگ کر سکتا ہے۔ یہ قاتل اس سے قبل 24سال تک مختلف صوبوں میں گھومتا رہا۔ وہ کسی ایک شہر میں چند ہفتے یا مہینے گزارتا، وہاں پارٹ ٹائم نوکری کرتا اور پھر وہاں سے کسی دوسرے شہر نکل جاتا۔ اس نے کبھی اپنا شناختی کارڈ بھی نہیں بنوایا تھا تاکہ پکڑا نہ جائے۔

اور جس شخص کے پاس شناختی کارڈ نہ ہو وہ اس ایپلی کیشن میں رجسٹرڈ نہیں ہو سکتا۔ ان دنوں وہ چین کے صوبے ہینگ ژاﺅ کے ضلع یو ہینگ میں تھا اور بھوکا سڑکوں پر گھومتا پھر رہا تھا کیونکہ اپنے فون میں ایپلی کیشن انسٹال نہ ہونے کی وجہ سے نہ تو وہ پارٹ ٹائم نوکری حاصل کر سکتا تھا اور اس کے پاس پیسے بھی ختم ہو چکے تھے۔ بالآخر یکم مئی کو اس نے خود کو بھوک سے تنگ آ کر خود کو پولیس کے حوالے کر دیا۔

مزید :

بین الاقوامی -