رکشہ ڈرائیور کے 20 ہزار سڑک پر گرگئے، بالآخر جس جگہ گرے وہاں پہنچا تو دیکھا ویسے ہی پڑے تھے، کسی نے بھی اُٹھائے کیوں نہیں؟ وجہ جان کر آپ کو بھی بے حد حیرت ہوگی

رکشہ ڈرائیور کے 20 ہزار سڑک پر گرگئے، بالآخر جس جگہ گرے وہاں پہنچا تو دیکھا ...
رکشہ ڈرائیور کے 20 ہزار سڑک پر گرگئے، بالآخر جس جگہ گرے وہاں پہنچا تو دیکھا ویسے ہی پڑے تھے، کسی نے بھی اُٹھائے کیوں نہیں؟ وجہ جان کر آپ کو بھی بے حد حیرت ہوگی

  

نئی دہلی(مانیٹرنگ ڈیسک) بھارت میں گزشتہ دنوں ایک رکشہ ڈرائیور کے 25ہزار روپے غلطی سے سڑک پر گر گئے لیکن کسی نے انہیں ہاتھ نہ لگایا اور رقم جوں کی توں واپس مالک کو مل گئی۔ لوگوں کے اس رقم کو ہاتھ نہ لگانے کی وجہ ایسی تھی کہ سن کر آپ کی حیرت کی انتہاءنہ رہے گی۔ ٹائمز آف انڈیا کے مطابق یہ واقعہ بھارتی ریاست بہار کے ضلع سہارسا کا ہے جہاں کوپا گاﺅں کا رہائشی گنجندر شاہ نامی یہ رکشہ ڈرائیور پیسے لے کر ٹین کا شیڈ خریدنے شہر گیا لیکن مارکیٹ پہنچ کر اس نے جیب دیکھی تو پیسے غائب تھے۔

گجندر انتہائی افسردہ ہو کر واپس گھر چلا گیا۔ دوسری طرف لوگوں نے سڑک پراتنی مقدار میں بکھرے پڑے نوٹ دیکھ کر سمجھ لیا کہ یہ کسی کی کورونا وائرس پھیلانے کی سازش ہے۔ لوگوں نے سمجھا کہ ان نوٹوں پر وائرس لگا یا ہوا ہے اور جان بوجھ کر سڑک پر پھینکے گئے ہیں تاکہ جو اٹھائے اسے وائرس لاحق ہو جائے۔ یہ سوچ کر انہوں نے نوٹ اٹھانے کی بجائے پولیس کو اطلاع دے دی۔ سازش کی یہ افواہ دورونزدیک پھیل گئی اور گجندر کے کانوں تک بھی پہنچ گئی۔

اسے معلوم ہوا کہ سڑک سے رقم اداکشن گنج تھانے کی پولیس اٹھا کر لے گئی ہے جس پر وہ تھانے چلا گیا اور ضروری کارروائی کے بعد پولیس نے رقم اس کے حوالے کر دی۔یوں کورونا وائرس کے خوف کی وجہ سے اس غریب رکشہ ڈرائیور کی کھوئی ہوئی رقم بحفاظت اسے واپس مل گئی۔اب یقینا وہ گھر بیٹھا ایسی افواہیں گھڑنے اور پھیلانے والوں کو دعائیں دے رہا ہو گا جن کی بدولت وہ اتنے بڑے نقصان سے بچ گیا۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -بین الاقوامی -