’ن لیگی رہنماؤں کو کوئی بات سمجھانا بھینس کے آگے بین بجانے کے مترادف ہے‘ 

’ن لیگی رہنماؤں کو کوئی بات سمجھانا بھینس کے آگے بین بجانے کے مترادف ہے‘ 
’ن لیگی رہنماؤں کو کوئی بات سمجھانا بھینس کے آگے بین بجانے کے مترادف ہے‘ 

  

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن)وزیرِ اعظم کے معاونِ خصوصی برائے امورِ سی ڈی اے علی نواز اعوان نے کہا ہے کہ انتخابی اصلاحات وقت کی اہم ضرورت ہیں، الیکٹرونک ووٹنگ مشین کا استعمال اور بیرونِ ملک مقیم پاکستانیوں کو ووٹ کا حق دینا بدلتے ہوئے زمانے کی اہم ترین ضروریات ہیں، مسلم لیگ  ن کے رہنماؤں کو کوئی بات سمجھانا بھینس کے آگے بین بجانے کے مترادف ہے۔

 انتخابی اصلاحات کمیٹی کے قیام کے بارے میں اپنے خصوصی بیان میں علی نواز اعوان نے کہا کہ زمانہ بدل چکا ہے اور ہمیں بھی بدلتے زمانے کے ساتھ نئے اطوار کو اپنانا ہوگا ، جو قومیں وقت کی رفتار کے ساتھ نہیں چلتیں ترقی کی دوڑ میں بہت پیچھے رہ جاتی ہیں،پی ڈی ایم کی جماعتیں ہم پر دھاندلی کے الزامات لگاتی ہیں اس بلیم گیم سے نکلنے کا بہترین حل الیکٹرانک ووٹنگ مشین ہے۔

علی نواز اعوان نے کہا کہ دنیا کے زیادہ تر ممالک ووٹنگ کے عمل کے لیے الیکٹرانک ووٹنگ مشین پر منتقل ہوچکے ہیں جس کی وجہ سے وہاں دھاندلی کی شکایات ختم ہوچکی ہیں ہمیں سب پارٹیوں کو مل بیٹھ کر پاکستان میں بھی یہ سسٹم متعارف کروانے کے لیے قانون سازی کرنی چاہیے ۔ اس قانون سازی سے صرف پاکستان تحریک انصاف کو فائدہ نہیں پہنچے گا بلکہ اس نظام میں شامل تمام فریق اس سے مستفید ہوں گے ۔ وزیرِ اعظم کے معاونِ خصوصی نے کہا کہ مسلم لیگ ن کا یہ موقف کہ چونکہ 2017 میں انتخابی اصلاحات کمیٹی بنی تھی اس لیے اب مزید اصلاحات کی ضرورت نہیں انتہائی فضول ہے۔ نظام کی بہتری ایک ارتقائی عمل ہے اور یہ عمل وقت کے ساتھ ساتھ چلتا رہنا چاہیے اگر نطام کی بہتری میں جمود ہوتا تو ہم اب تک 1973 کے آئین میں 25 ترامیم نہ کر چکے ہوتے۔

علی نواز اعوان نےکہاکہ ن لیگ کے رہنماؤں کو کوئی بات سمجھانا بھینس کے آگے بین بجانے کے مترادف ہے،انتخابی اصلاحات کے حوالے سے مزید بات کرتے ہوئے وزیرِ اعظم کے معاونِ خصوصی نےکہا کہ بیرونِ ملک مقیم پاکستان ہماری معیشت میں کلیدی کردار ادا کرتے ہیں اور28 ارب روپے کا زرِ مبادلہ پاکستان بھیجتے ہیں انہیں ملکی نظام میں اپنی رائے دینے کاپورا پورا حق دینا چاہیے،ہمیں انہیں ووٹ کا حق دینے کے لیے قانون سازی کرنی ہوگی تاکہ ہمیں اتنی خطیر رقم بطورِ زرِ مبادلہ بھیجنے والے ہمارے شہری اپنے آپ کو اتناہی پاکستانی سمجھیں جتنے ہم یہاں رہنے والے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ بیرونِ ملک مقیم پاکستانیوں کوووٹ کا حق دینے کافائدہ بھی صرف پاکستان تحریک انصاف کو نہیں بلکہ نظام میں موجود تمام جماعتوں کو ہوگا۔ ہمیں انتخابی اصلاحات کے لیے سنجیدگی سے سوچنا ہوگا تاکہ ہم زمانے کی رفتار کے ساتھ چل سکیں۔

مزید :

علاقائی -اسلام آباد -