ہائی کورٹ کی کلبھوشن کو وکیل فراہم کرنے سے متعلق بھارت کو ایک اور مہلت

 ہائی کورٹ کی کلبھوشن کو وکیل فراہم کرنے سے متعلق بھارت کو ایک اور مہلت
 ہائی کورٹ کی کلبھوشن کو وکیل فراہم کرنے سے متعلق بھارت کو ایک اور مہلت

  

 اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) اسلام آباد ہائی کورٹ نے بھارتی جاسوس کلبھوشن یادھو کو وکیل فراہم کرنے کی درخواست پر اپنے تحریری حکم نامہ میں کہا ہے کہ کلبھوشن کو وکیل فراہم کرنے سے متعلق بھارت کو ایک اور مہلت دے رہے ہیں۔

نجی ٹی وی کے مطابق اسلام آباد ہائی کورٹ کے چیف جسٹس اطہر من اللّٰہ کی سربراہی میں لارجر بنچ نے حکم نامہ جاری کیا۔تحریری حکم نامے میں کہا گیا کہ حکومت اس عدالتی کارروائی سے متعلق بھارت کو آگاہ کرنے کی ایک اور کوشش کرے ، موجودہ عدالتی کارروائی کلبھوشن کو فیئر ٹرائل کا موقع فراہم کرنے کے لیے کی جارہی ہے,عدالتی کارروائی کا مقصد عالمی عدالت انصاف کے فیصلے پر عمل درآمد کو یقینی بنانا ہے۔

تحریری حکمنامہ میں کہا گیا کہ عدالت محسوس کرتی ہے پاکستانی عدالتوں کے دائرہ کار پر بھارتی غلط فہمی کو دور کیا جائے، بھارت عالمی عدالت انصاف کے فیصلے پر عمل درآمد سے متعلق تحفظات سے آگاہ کرسکتا ہے۔حکم نامے میں کہا گیا کہ اٹارنی جنرل نے بتایا کہ بھارت نے پاکستانی عدالتوں کے سامنے پیش ہونے سے انکار کردیا ہے، بھارت نے یہ موقف پیش کیا ہےکہ ویاناکنونشن کےتحت وہ ایک خودمختار ریاست ہے، بھارت نے اپنے آٹھ قیدیوں کی رہائی کے لیے اسی عدالت سے رجوع کیا۔اٹارنی جنرل کے مطابق بھارت نے پاکستانی عدالت کی کلبھوشن کو فیئر ٹرائل دینے کی آبزرویشن کو سراہا۔

مزید :

علاقائی -اسلام آباد -