قاتل اپنے مقصد کے حصول کےلئے فیسبک کس طرح استعمال کرتے ہیں ؟دلچسپ تحقیق

قاتل اپنے مقصد کے حصول کےلئے فیسبک کس طرح استعمال کرتے ہیں ؟دلچسپ تحقیق
قاتل اپنے مقصد کے حصول کےلئے فیسبک کس طرح استعمال کرتے ہیں ؟دلچسپ تحقیق

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

نیو دہلی(نیوزڈیسک)سوشل میڈیا کو لوگ اپنی زندگی اور معاشرتی سرگرمیوں کے لئے استعمال کرتے ہیں لیکن ہوشیار ہوجائیں کیونکہ کچھ لوگ فیس بک کو قتل اور دیگر خطرناک جرائم کے لئے استعمال کر رہے ہیں۔ حال ہی میں ماہرین نے اس پر تحقیق کرتے ہوئے چھ طرح کے جرائم کا انکشاف کیا ہے کہ جس میں مجرموں نے لوگوں کوقتل کیا۔تحقیق کاروں نے 2008ءسے 2013ءتک 48کیسوں کا مطالعہ کیا اور چھ طرح کے قاتلوں کو شناخت کیا جن میں ری ایکٹرز(ردعمل کرنے والے) ، انفارمر(مخبر)، دشمن، تخیلاتی، شکار ی اور دھوکے باز شامل ہیں۔
رد عمل کرنے والے وہ لوگ ہوتے ہیں جو کسی پوسٹ پر غصہ ہو کر پوسٹ کرنے والے پر براہ رست حملہ کرتے ہیں۔
انفارمر وہ ہوتے ہیں جو بتاتے ہیں کہ انہوں نے شکار کا کام تمام کردیا ہے یا وہ ایسا ارادہ رکھتا ہے۔
کچھ لوگ پوسٹس پر فیس بک استعمال کرنے والوں کے دشمن بن جاتے ہیں اور جب بحث طول اختیار کر جائے تو یہ مسلحہ ہو کر حملہ کر دیتے ہیں۔
تخیلاتی قاتل ہو ہوتے ہیں جو اپنی خیالی دنیا میں رہتے ہیں ۔ایسے لوگوں میں تخیلاتی اور حقیقی دنیا میں بہت باریک فرق ہوتا ہے اور جب کسی کو ان کے اس طرح کے رویہ کا علم ہوجائے تو یہ حملہ کرسکتے ہیں۔
شکاری قاتل اپنی جھوٹی پروفائل بنا کر دوستی کرنے کی کوشش کرتے ہیں اور زیادہ سے زیادہ معلومات اکٹھی کرکے شکار سے ملنے کی کوشش کرتے ہیں ۔
 دھوکے بازکسی اور نام سے اکاﺅنٹ چلاتے ہیں اور شکار کو یقین دلانے کے بعد اپنا قبیح فعل سرانجام دیتے ہیں۔
تحقیق کاروں کا کہنا ہے کہ سوشل میڈیا پر اس کا الزام نہیں دیا جا سکتا اور ضروری ہے کہ صارفین خود احتیاط سے کام لیتے ہوئے ایسے لوگوں پر نظر رکھیں۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -