یمنی وزیراعظم نے حکومت بنانے کے لیے شوشل میڈیا صارفین سے مدد مانگ لی

یمنی وزیراعظم نے حکومت بنانے کے لیے شوشل میڈیا صارفین سے مدد مانگ لی
یمنی وزیراعظم نے حکومت بنانے کے لیے شوشل میڈیا صارفین سے مدد مانگ لی

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

صغاء(نیوز ڈیسک) فیس بک کو عام طور پر تو تفریح اور سماجی رابطوں کا ذریعہ ہی سمجھا جاتا ہے لیکن یمن کے وزیراعظم اسے نئی حکومت بنانے کیلئے استعمال کررہے ہیں۔

ماہ نومبر کے آغاز میں وزیراعظم نے اپنے فیس بک اکاﺅنٹ پر نئی حکومت بنانے کے لئے عوام سے تجاویز طلب کرلیں۔ وزیراعظم کا کہنا ہے کہ وہ وزراءکی تقرری کے لئے عوام کی رائے لینا چاہتے ہیں اور یہی وجہ ہے کہ انہوں نے فیس بک کا استعمال کیا ہے۔ ان کے اکاﺅنٹ کے 33ہزار سے زائد فالوورز ہیں اور اب تک بھاری تعداد میں ناموں کی تجاویز دی جاچکی ہیں۔ حکومت بنانے کے لئے فیس بک کے استعمال کا یہ منفرد واقعہ ہے۔ انسانی حقوق کے لئے کام کرنے والے کارکن فارعہ المسلمی جو کہ عام طور پر یمنی حکومت پر سخت تنقید کرتے ہیں انہوں نے وزیراعظم کے اس جدت پسند اقدام کو پسند کیا ہے تاہم حکومت کے مخالفین کو یہ طریقہ زیادہ پسند نہیں آیا۔ ان کا کہنا ہے کہ یمن کی آبادی تقریباً اڑھائی کروڑ ہے اور ان میں سے آٹھ لاکھ فیس بک استعمال کرتے ہیں اس لئے حکومت بنانے کے لئے فیس بک کا استعمال اچھا خیال نہیں ہے۔

یمن میں حالیہ سیاسی بحران کے بعد وزیراعظم محمد باسن دووا پہلے وزیراعظم ہیں اور یہ ان کی پہلی حکومت ہوگی۔

 

مزید : بین الاقوامی