سنگدل آدم خور کا رونگٹے کھڑے کر دینے والااقدام

سنگدل آدم خور کا رونگٹے کھڑے کر دینے والااقدام
سنگدل آدم خور کا رونگٹے کھڑے کر دینے والااقدام

  

لندن (نیوز ڈیسک) فلموں اور خوفناک کہانیوں میں پایا جانے والا آدم خور کا کردار برطانیہ میں حقیقی زندگی میں آگیا۔ ویلز کے علاقہ آرگوڈ میں ایک وحشی شخص نے ایک 22 سالہ لڑکی کی آنکھیں نکال کر کھالیں اور اس کے چہرے کا گوشت کھا رہا تھا کہ پولیس نے اسے آلیا۔

مقامی میڈیا کے مطابق ملزم کو حال ہی میں جیل سے رہا کیا گیا تھا اور اسے حالیہ رہا کردہ قیدیوں کے زیر استعمال ایک ہوٹل میں رکھا گیا تھا۔ ایک سکیورٹی گارڈ نے نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر بتایا کہ 34 سالہ شخص میتھیو ولیمز کی ملاقات 22 سالہ لڑکی سے چند دن قبل ہوئی تھی۔ گارڈ کا کہنا ہے کہ جب اس کی نظر اچانک کمرے میں پڑی تو اس نے دیکھا کہ میتھیو کے ہاتھ اور منہ خون میں رنگے تھے اور لڑکی کی آنکھیں نکال کر چبا رہا تھا۔ کمرے کا دروازہ اندر سے بند ہونے کی وجہ سے اسے روکنا ممکن نہیں ہو پارہا تھا۔ لڑکی کی آنکھیں کھانے کے بعد درندہ صفت شخص نے اس کے چہرے کے گوشت میں دانت گاڑھ دئیے۔ اسی دوران پولیس کو بلوایا جاچکا تھا لیکن پولیس کے پہنچنے تک یہ لڑکی کا آدھا چہرہ کھا چکا تھا۔ پولیس نے بجلی کا جھٹکا لگانے والے ہتھیار ٹیزر کی مدد سے اس پر حملہ کیا جس کے نتیجہ میں یہ بے حس و حرکت ہوکر نیچے گر گیا۔ اسے ہسپتال لے جایا گیا جہاں ڈاکٹروں نے تصدیق کردی کہ اس کی موت ہوچکی تھی۔ یہ بھی معلوم ہوا کہ مجرم کوکین کے نشے کا عادی تھا۔

مزید : ڈیلی بائیٹس