نو عمر لڑکی کی گردن میں مسلسل درد ، ڈاکٹروں نے معائنہ کیا تو ایسا انکشاف ہواجو تمام والدین کو پریشان کر دے

نو عمر لڑکی کی گردن میں مسلسل درد ، ڈاکٹروں نے معائنہ کیا تو ایسا انکشاف ...
نو عمر لڑکی کی گردن میں مسلسل درد ، ڈاکٹروں نے معائنہ کیا تو ایسا انکشاف ہواجو تمام والدین کو پریشان کر دے

  

برمنگھم (نیوز ڈیسک) آج کل جدید ٹیکنالوجی کا دور ہے اور بچے ہوں یا بڑے روزانہ گھنٹوں اپنے لیپ ٹاپ، ٹیبلٹ یا موبائل فون پر نظریں جمائیں رکھتے ہیں۔ اس عمل کے دوران یقینا گردن کو سکرین کی طرف جھکائے رکھنا پڑتا ہے اور بعض اوقات تواس کادورانیہ گھنٹوں پر مشتمل ہوسکتا ہے۔ قدرت نے ہماری ریڑھ کی ہڈی کو ایک خاص حد تک کھنچاﺅ کے قابل بنایا ہے لیکن مسلسل گردن کو موبائل فون وغیرہ کی سکرین کی طرف جھکائے رکھنے سے ریڑھ کی ہڈی اور خصوصاً گردن میں واقع مہروں پر مسلسل دباﺅپڑتا ہے جس کا نتیجہ آپ کی توقعات سے کہیں زیادہ خوفناک نکل سکتا ہے۔ کچھ ایسا ہی دردناک انکشاف ایک نو عمر برطانوی لڑکی کے والدین کے لئے بھی ہوا جو اسے گردن میں مسلسل درد کی وجہ سے ڈاکٹر کے پاس لے کر گئے تھے۔

قدرتی طور پر ریڑھ کی ہڈی میں 40 ڈگری کاخم ہوتا ہے لیکن ڈاکٹروں کا کہنا ہے کہ گردن کو مسلسل جھکائے رکھنے والوں کی ریڑھ کی ہڈی میں یہ خم کم ہوجاتا ہے اور وقت کے ساتھ ساتھ اس خم کی سمت الٹی ہو جاتی ہے، جسے شدید ترین اور انتہائی تکلیف دہ بیماری تصور کیا جاتا ہے۔ اس بیماری کے نتیجے میں گردن میں مسلسل شدید درد کا سامنا رہتا ہے اور بسااوقات تو اسے حرکت دینا بھی ممکن نہیں رہتا۔

مزید جانئے: شادی شدہ مردوں کی بیویاں اس عورت سے کیا کام لیتی ہیں؟ جان کر آپ پریشان ہو جائیں گے

روزانہ کئی گھنٹے تک موبائل فون پر سر جھکائے رکھنے والی نو عمر لڑکی کی گردن میںشدید تکلیف کا سبب بھی اس کا موبائل فون ہی نکلا۔ اس نئی بیماری کو، جو کہ موبائل فون یا ٹیبلٹ کمپیوٹر وغیرہ پر گردن مسلسل جھکائے رکھنے سے پیدا ہوتی ہے ’ٹیکسٹ نیک‘ کا نام دیا گیا ہے۔ ماہرین صحت کا کہنا ہے کہ آج کل نوجوان نسل میں کندھوں کی تکلیف، سر کا عام درد، میگرین، اعضاءکا سن ہوجانا اور خصوصاً ہاتھوں اور بازوﺅں کا سن ہوجانا جیسے مسائل عام دیکھنے میں آرہے ہیں۔ جو افراد مسلسل ٹیکسٹ میسج کرنے کے لئے یا فون پر انٹرنیٹ استعمال کرتے ہوئے گردن جھکائے رکھتے ہیں ان میں یہ تمام مسائل عام پائے جا رہے ہیں۔ لوگ کندھوں، بازوﺅں اور گردن میں درد اور ان کے سن ہوجانے کی شکایت تو کرتے نظرآتے ہیں لیکن ان میں سے بہت کم افراد یہ جانتے ہیں کہ ان کی اپنی عادات ہی ان مسائل کی بنیادی وجہ بن رہی ہیں۔

ڈاکٹروں کا کہنا ہے کہ اس تکلیف دہ مسائل سے بچنے کے لئے پہلے تو ضروری ہے کہ آپ اپنے موبائل فون یا ٹیبلٹ کمپیوٹر کا استعمال بہت محدود کردیں، اور موبائل فون کو استعمال کرتے ہوئے کوشش کریں کہ یہ آپ کے چہرے یا آنکھوں کی سطح کے برابر بلند ہو۔ دن میں کئی بار ہلکی پھلکی ورزش کو بھی اپنا معمول بنائیں۔

مزید :

تعلیم و صحت -