پاکستان اور چین کے مابین نالیج کوریڈورقیام عمل میں لا یاجا نا چاہئے ‘ شاہ فیصل آفریدی

پاکستان اور چین کے مابین نالیج کوریڈورقیام عمل میں لا یاجا نا چاہئے ‘ شاہ ...

  

لاہور(کامرس رپورٹر)پاک چین جوائینٹ چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے صدر شاہ فیصل آفریدی نے کہا ہے کہ تیز تر معاشی اور معاشتری ترقی کیلئے پاکستان اور چین کے مابین اکنامک کوریڈور کے ساتھ ساتھ ’’نالیج کوریڈور‘‘ کا قیام بھی عمل میں لا یاجا نا چاہئے ۔ انہوں نے کہا کہ دنیا بھر میں ترقی یافتہ اور ترقی پذیر اقوام میں اس وقت اقتصادی ترقی کیلئے تحقیقی علوم اور تکنیکی مہارتوں کو فروغ دینے پر کام ہو رہا ہے ، جس میں چین پیش پیش ہے۔فیصل آفریدی نے کہا کہ چین کے ساتھ تاریخی دوستی سے استفادہ کرتے ہوئے ہمیں پاکستان اور چین کے مابین مصنوعات ،خدمات،تحقیق، جدت طرازی،انفراسٹرکچر،ڈیجیٹل ٹیکنالوجی،زراعت، ماحولیات کے ساتھ ساتھ سماجی اور ثقافتی علوم میں اشتراک کو عمل میں لایا جانا چاہیے۔انہوں نے کہا کہ پاک چین اقتصادی راہداری اس نالیج کوریڈار کی بنیاد ثابت ہو سکتا ہے جس کے تحت دونوں ممالک کے ماہرانہ علوم کی نشاندہی کی جانی چاہئے ۔اُنہوں نے کہا کہ نالیج کوریڈور دونوں ممالک کے ماہرانہ اثاثوں پر مشتمل ایک ایسا پلیٹ فارم ثابت ہو گا جہاں دونوں ممالک کیلئے علم و آگاہی سے آراستہ اور دانشورانہ صلاحیتوں سے مزین افرادی قوت تیار کی جائے گی۔فیصل آفریدی نے کہا کہ نالیج کوریڈور کے تحت دونوں ممالک کے عوام میں ایسے ٹیلنٹ اور مہارت کو فروغ دیا جائے گا جو کہ ملکی نظام کی صنعتوں ،تعلیمی اداروں ،کاروباری کمپنیوں اور ہسپتالوں وغیرہ کے عین مطابق ہو گا ۔ور یہ ٹیلنٹ ملک کے معاشی اور معاشرتی نظام میں نئی روح پھونکنے کا ذریعہ بنے گا۔انہوں نے یقین ظاہر کیا کہ پاکستان اور چین کے مابین علمی اشتراک،وسائل کی وسعت اور ماہرانہ تعاون سے ایک ایسی افرادی قوت منظر عام پر آئے گی جو کہ معیشت میں انقلاب برپا کر دے گی ۔کالا باغ ڈیم کی تعمیر کیلئے تمام صنعتکار برادری حکومت کے ساتھ ہے ۔

مزید :

کامرس -