عوامی ورکرز پارٹی کا شہداء سانحہ سندر سے اظہار یکجہتی کیلئے مظاہرہ

عوامی ورکرز پارٹی کا شہداء سانحہ سندر سے اظہار یکجہتی کیلئے مظاہرہ

  

لاہور (لیڈی رپورٹڑ) عوامی ورکرز پارٹی لاہور کے زیر اہتمام چیئرنگ کراس پر سندر میں شہید ہونے والے محنت کشوں سے یک جہتی کے اظہار کیلئے ایک مظاہرہ کیا گیا جس میں ٹریڈ یونین اور سیاسی کارکنوں کی ایک بڑی تعداد نے شرکت کی۔ مظاہرین ’’شرم کرو، حیاء کرو، غریب مزوروں کا خیال کرو، قاتل قاتل وزیر محنت قاتل، متعلقہ لیبر افسران اور وزیر محنت کومعطل کرو، ایک کا دکھ سب کا دکھ،مزدور اتحاد زندہ باد، وزیر محنت استعفیٰ دو، قاتل قاتل حکومت قاتل ‘‘ کے نعرے لگا رہے تھے۔ مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے عوامی ورکرز پارٹی کے جنرل سیکرٹری فاروق طارق نے کہا کہ حکومت مزدوروں کے معاملے میں بالکل بے حس ہو چکی ہے اور قانون کو اپنی لونڈی سمجھتی ہے یہی وجہ ہے کہ مزدور حکومتی بے حسی کی وجہ سے مسلسل اپنی جانیں کھو رہے ہیں لیکن حکومت ڈھیٹ تماشائی بنی ہوئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس فیکٹری میں لیبر قوانین کی دھجیاں اڑائی جارہی تھیں، بچوں سے لیبر لی جا رہی تھی۔ 12 گھنٹے کام کے 200 روپے روزانہ دیئے جارہے تھے اور بلڈنگ قوانین پر عملدرآمد نہیں کیا گیا تھا۔ اُنہوں نے کہا کہ سندر سٹیٹ کی 450 فیکٹریوں میں بھی لیبر قوانین کی خلاف ورزیاں جاری ہیں۔ حکومت اپنے ہی قانون پر عملدرآمد کروانے میں ناکام ہے۔انہوں نے مطالبہ کیا کہ شہید ہونے والے ہر محنت کش کو 30 لاکھ روپے ادا کیے جائیں اور وزیر محنت فوری طور پر استعفیٰ دیں۔ انہوں نے کہا کہ اگلے ہفتے ہم وزیر اعلیٰ پنجاب کے دفتر کے سامنے مظاہرہ کریں گے اور اُس کے بعد محکمہ لیبر کے سامنے مظاہرہ کیا جائے گا۔محمد یوسف بلوچ چیئرمین آل پاکستان ورکرز ٹریڈ یونین کنفیڈریشن نے کہا کہ قانون پر عملدرآمد کروانا آخر کس کی ذمہ داری ہے۔ مظاہرین میں شریک ہونے والوں میں نیاز خان، محمود بٹ، شائستہ جان، عابدہ چوہدری، مقصود خوشی، شیر خان، ہاشم بن راشد، سائرہ خان، عذرا شاد، نازلی جاوید، حسن محمد راناو دیگر شامل تھے۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -