سانحہ سندر،فیکٹری کے ملبہ سے نوجوان زندہ برآمد

سانحہ سندر،فیکٹری کے ملبہ سے نوجوان زندہ برآمد

  

لاہور(کرائم سیل) سندرمیں زمین بوس ہونے والی فیکٹری کے ملبے سے تقریبا 50گھنٹے کے بعد ایک نوجوان کو زندہ نکال لیا گیا ہے جس کا نام شاہد اور عمر 18سال ہے اس کو جناح ہسپتال منتقل کیا گیا ہے ۔ڈی سی او لاہور کا کہنا ہے کہ ملبے سے زندہ نکلنے والے نوجوان کی ٹانگ زخمی ہے جوگھٹنوں کے بل خود ملبے سے باہر آیا ہے ۔یہ بھی معلوم ہوا ہے کہ زخمی کے اہل خانہ پہلے ہی شاہد نام کے ایک نوجوان کو اپنا لخت جگر سمجھ کر دفن کر چکے ہیں یہ بات ایک مقامی نیوز چینل پرزخمی شاہد کے دوست فیضان نے بتائی ہے اور اس نے موقف اختیار کیا ہے کہ شاہد کے زندہ بچ جانے کی اطلاع اس نے اہل خانہ کو کردی ہے اور اس کے والد خانیوال سے بیٹے کو لینے کیلئے لاہور روانہ ہو گئے، ایک ماتم کدہ گھر بیٹے کے زندہ ہونے کی اطلاع ملتے ہی خوشیاں لوٹ آئیں مگر ایک نئی بحث چھڑ گئی ہے کہ دفن ہونے والا وہ شخص کون تھا اور اب اس کے ورثا کا کیسے پتہ چلے گا۔پولیس کے مطابق دفن ہونے والے شخص کی لاش نکال کر ڈی این اے ٹیسٹ کے ذریعے اس کے ورثا تلاش کرنے کی کوشش کریں گے۔

مزید :

علاقائی -