کروڑوں روپے کی بچت کیلئے حاجی کیمپ ختم کرنے کی تجویز

کروڑوں روپے کی بچت کیلئے حاجی کیمپ ختم کرنے کی تجویز

  

لاہور(ڈویلپمنٹ سیل)وزارت مذہبی امور نے ملک بھر کے حاجی کیمپوں کا کردار محدود کر دیا حاجی کیمپ ختم کرنے کی تجویز،کروڑوں روپے کی بچت ہو گی ،ذرائع سے معلوم ہوا ہے وزارت مذہبی امور نے سرکاری اور پرائیویٹ حج سکیم کی حج بکنگ سے لے کر حج ویزہ لگوانے تک کے تمام مراحل کو آن لائن کر دیا ہے حج آپریشن کے موقع پر حجاج کرام براہ راست ائیرپورٹ پر جاتے ہیں وزارت نے پرائیویٹ حج کمپنیوں کے ڈائریکٹر وغیرہ اور دفاتر کی تبدیلی کا مرحلہ بھی آسان کرتے ہوئے اپنے پاس رکھ لیا ہے سرکاری اور پرائیویٹ سکیم کے عازمین حج گھر بیٹھے ہر طرح کی معلومات آن لائن حاصل کر سکتے ہیں حاجی کیمپوں پر کروڑوں روپے ضائع کیا جا رہا تھا درجنوں سٹاف کو تنخواہیں بھی دی جا رہی ہیں اور حاجی کیمپ کے لیے عمارتوں کے حصول کے لیے لاکھوں روپے بھی کرائے کی مد میں ادا کیے جا رہے ہیں حاجی کیمپوں اور وہاں پر موجود سٹاف سے کام صرف حج آپریشن کے ایک ماہ میں صرف حاجیوں کو ٹیکے لگوانے اور سرکاری عازمین حج کو پاسپورٹ ،ٹکٹ دینے تک کا رہ گیا ہے ائیر لائنز کی طرف سے تجویز آ گئی ہے حاجیوں کو پاسپورٹ،ٹکٹ ہم اپنے دفاتر سے دے لیں گے حاجی کیمپوں میں بھی ہم ہی دیتے ہیں حاجی کیمپوں والے صرف ہیڈ ماسٹری کرتے ہیں روزنامہ پاکستان کو معلوم ہوا ہے حاجی کیمپو ں کے کردار کو محدود کرنے کے بعد سنجیدگی سے انہیں ختم کرنے کی تجویز زیر غور آئی ہے جس سے کروڑوں روپے ماہانہ کی بچت ہو گی وزارت کے ذرائع سے معلوم ہوا ہے اس کے لیے مختلف تجاویز پر غور شروع کر دیا گیا ہے۔

حاجی کیمپ

مزید :

صفحہ آخر -