ایم کیو ایم کا استعفیٰ واپس لینا قابل ستائش ہے ،آغا سراج درانی

ایم کیو ایم کا استعفیٰ واپس لینا قابل ستائش ہے ،آغا سراج درانی

  

کراچی (اسٹاف رپورٹر)سندھ اسمبلی کے اسپیکر آغاسراج درانی نے ایم کیو ایم کی جانب سے اپنے استعفیٰ واپس لینے کے فیصلہ کا بھرپور خیرمقدم کرتے ہوئے توقع ظاہر کی ہے کہ ایم کیو ایم سندھ کی ترقی ،خوشحالی اور صوبے میں جمہوری اداروں کے استحکام کے لیے دیگر پارلیمانی گروپوں کے ساتھ مل کر کام کرے گی ۔انہوں نے یہ بات جمعہ کو ایم کیو ایم کے ارکان کی جانب سے اپنے استعفیٰ واپس لینے کی درخواستیں وصول کرنے کے بعد وہاں موجود میڈیا کے نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہی ۔آغاسراج درانی نے کہا کہ سیاست میں ہمیشہ آپشنز کھلے رکھے جاتے ہیں اور بات چیت کے دروازے کبھی بند نہیں ہوتے ۔متحدہ نے کچھ عرصہ قبل اپنے 19نکات پیش کرتے ہوئے استعفوں کا فیصلہ کیا تھا ۔انہوں نے کہا کہ میں نے اسی وقت ایم کیو ایم کے دوستوں کو مشورہ دیا تھا کہ وہ مستعفی نہ ہوں کیونکہ انہوں نے اپنے 19نکات میں جن شکایات کا ذکر کیا ہے ان کا تعلق وفاق سے ہے سندھ حکومت کا اس سے کوئی لینا دینا نہیں ہے لیکن متحدہ نے جلد بازی کی ۔تاہم یہ خوش آئند بات ہے کہ آج وہ واپس لوٹ آئے ہیں ۔آغا سراج درانی نے کہا کہ ایم کیو ایم کے 51ارکان کی جانب سے آج انہیں استعفیٰ واپس لینے کی درخواستیں موصول ہوئی ہیں ۔انہوں نے سیکرٹری سندھ اسمبلی کو ہدایت کی ہے کہ وہ ان درخواستوں پر مناسب کارروائی کریں ۔اسپیکر کی حیثیت سے وہ ایم کیو ایم کی جانب سے پہلے دی جانے والی درخواستوں اور آج پیش کی جانے والی درخواستوں کا مکمل جائزہ لیں گے اور آئندہ چند روز میں قانون کے مطابق اس پر فیصلہ کرلیا جائے گا ۔آغا سراج درانی نے سانحہ خیرپور کو افسوسناک واقعہ قرار دیتے ہوئے کہا کہ اس واقعہ کی غیر جانبدارانہ تحقیقات ہونی چاہئیں اور جو بھی اس سانحہ کا ذمہ دار قرار دیا جائے اس کو سخت سزا دی جائے خواہ اس میں پیپلزپارٹی کے لوگ ہی کیوں نہ ملوث ہوں ۔ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ پیر پگارا ایک تجربہ کار سیاست دان ہیں اور ان کا تعلق معروف سیاسی گھرانے سے ہے ۔اس لیے ان سے یہ توقع کی جاتی ہے کہ ہفتہ کے روز انہوں نے اپنی قیام گاہ پر حر جماعت کا جو اجلاس بلایا ہے اس میں وہ کوئی مناسب اور اچھا فیصلہ کریں گے ۔آغا سراج درانی نے کہا کہ وہ اپوزیشن اور حکومت کے درمیان ایک پل کی حیثیت رکھتے ہیں ۔اگر حکومت سندھ نے سانحہ خیرپور کے بعد کشیدگی کو کم کرنے کے لیے فنکشنل لیگ سے رابطے یا بات چیت کے لیے انہیں کوئی کردار ادا کرنے کے لیے کہا تو وہ اس کے لیے تیار ہیں ۔سندھ کے حالیہ بلدیاتی انتخابات سے متعلق انہوں نے کہا کہ پیپلزپارٹی صوبے کے برسا برس سے سب مقبول سیاسی جماعت ہے اور حالیہ بلدیاتی انتخابات میں عوام نے ایک مرتبہ پھر یہ ثابت کردیا ہے کہ وہ صرف پیپلزپارٹی کو حق نمائندگی دینا چاہتے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ الیکشن کمیشن کے افسران نے میرے حلقے میں کھل کر پیپلزپارٹی کے خلاف کام کیا لیکن اس کے باوجود سکھر اور لاڑکانہ ڈویژن میں پیپلزپارٹی کی کامیابی کا تناسب 99فیصد رہا ۔آغاسراج درانی نے کہا کہ سندھ اسمبلی صوبے کا سب سے اعلیٰ جمہوری ایوان ہے ،جہاں لاکھوں ووٹوں سے منتخب ہونے والے ارکان بیٹھتے ہیں اور یہ واحد جگہ ہے کہ جہاں عوامی نمائندے اپنے حلقے کے عوام کے مسائل کے لیے موثر انداز میں آواز بلند کرسکتے ہیں ،اس لیے ایم کیو ایم نے واپسی کا دانشمندانہ فیصلہ کیا ہے اور اس سے سندھ میں جمہوریت کو استحکام حاصل ہوسکے گا ۔

مزید :

کراچی صفحہ اول -