’پائلٹ کی حاضر دماغی نے مسافر طیارے کو میزائل کا نشانہ بننے سے بچا لیا‘

’پائلٹ کی حاضر دماغی نے مسافر طیارے کو میزائل کا نشانہ بننے سے بچا لیا‘
’پائلٹ کی حاضر دماغی نے مسافر طیارے کو میزائل کا نشانہ بننے سے بچا لیا‘

  

لندن (نیوز ڈیسک) مصر کے تفریحی مقام شرم الشیخ سے روس کے لئے روانہ ہونے والے طیارے کی مبینہ طور پر دہشت گردی سے تباہی کی خبروں نے تہلکہ برپا کررکھا ہے۔ اگرچہ مصر کی طرف سے اس بات کی تردید کی جارہی ہے کہ طیارے کی تباہی میں دہشت گردی کا کوئی ہاتھ ہوسکتا ہے لیکن برطانوی حکومت نے ایک اور تشویشناک بات کی تصدیق کر دی ہے جس کے مطابق اگست میں تھامسن ائیر ویز کا ایک طیارہ بھی دہشت گردوں کی طرف سے چلائے گئے میزائل سے بال بال بچا تھا۔ لندن سے شرم الشیخ جانے والی اس پرواز میں 189 مسافر سوار تھے اور اخبار دی گارڈین کی رپورٹ کے مطابق ایک میزائل اس کے ایک ہزار فٹ کے فاصلے پر آن پہنچا تھا، جس پر پرواز کو فوری اپنا رخ تبدیل کرنا پڑا۔ اخبار کے مطابق یہ واقعہ 23 اگست کو پیش آیا اور پائلٹ کا کہنا ہے کہ میزائل طیارے کی طرف ہی فائر کیا گیا تھا لیکن فوری طور پر طیارے کا رخ موڑنے سے تباہی ٹل گئی۔

مزید جانئے: برطانیہ کا مصر کیلئے تمام پروازوں کی معطلی کا اعلان، 3ہزار کے قریب برطانوی سیاح پھنس گئے

روس کی میٹرو جیٹ ائیرلائن کے طیارے کی تباہی کے بعد برطانیہ نے شرم الشیخ کے لئے پروازیں بند کردی ہیں جبکہ کئی دیگر ممالک کی طرف سے بھی اسی طرح کا فیصلہ متوقع ہے۔ تھامسن ائیرویز کے طیارے کے ساتھ پیش آنے والے واقعے کے انکشاف کے بعد مصر کی تشویش میں مزید اضافہ ہوگیا ہے کیونکہ اس کی فضاؤں کے ہوائی سفر کے لئے غیر محفوظ ہونے کا تاثر مزید تقویت پکڑجائے گا جو کہ اس کی سیاحتی صنعت کے لئے بہت بڑا دھچکا ثابت ہوگا۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -