ایل پی جی قیمتوں میں مسلسل اضافہکسی صورت قبول نہیں، ذیشان اکمل

ایل پی جی قیمتوں میں مسلسل اضافہکسی صورت قبول نہیں، ذیشان اکمل

لاہور(خبرنگار) عوامی رکشہ یونین پاکستان کے قائمقام چیئرمین ذیشان اکمل نے مشاورتی کونسل کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ ایل پی جی کی قیمتوں میں مسلسل اضافہ کر کے غریبوں کے چولہے ٹھنڈے کرنے کی سازش کی جارہی ہے۔سردیوں کی آمد کے ساتھ ہی گیس کی لوڈ شیڈنگ شروع ہو جاتی ہے۔جس کا فائدہ اٹھانے کیلئے ایل پی جی مافیہ سرگرم ہو جاتا ہے۔انہوں نے کہا کہ سول ڈیفنس اور پولیس کے اہلکار مختلف قسم کے اعتراضات لگا کر دکانیں سیل کر رہے ہیں ۔ان دنوں بھتہ خوری بھی اپنے عروج پر پہنچ چکی ہے۔سردیوں میں گیس کی شارٹیج کا بہانہ بنا کر ایل پی جی پیداواری اداروں نے قیمتوں میں روزانہ کی بنیاد پر اضافہ کرنا شروع کر دیا ہے۔جس کی وجہ سے غریب صارفین بہت زیادہ متاثر ہو رہے ہیں۔پنجاب میں بھر میں 3000ہزار سے زائد دکانیں سیل کر دی گئی ہیں یہ سب چھوٹے چھوٹے دکاندار ہیں جو دن بھر میں بمشکل ایک سلنڈر ہی فروخت کر پاتے ہیں انہوں نے کہا کہ روزگار کے چھن جانے سے جہاں ان گھروں میں بچے بھوک سے بلک رہے ہیں وہیں رکشہ ڈرائیور بھی پریشانی کا شکار ہیں۔مہنگی ایل پی جی خریدنے کی وجہ سے ان کی آمدنی میں بھی بہت زیادہ کمی واقع ہوئی ہے۔انہوں نے کہا کہ حکومت اورضلعی انتظامیہ حفاظتی اقدامات کی آڑ میں غریب دکانداروں کے پیٹ پر ٹانگ نہ مارے بلکہ سیفٹی کے عملی اقدامات کرے ۔ذیشان اکمل کا کہنا تھا کہ دکانوں کی بند ش کے معاملے پر ہم ایل پی جی ڈسٹری بیوٹرز ایسوسی ایشن کے ساتھ ہیں اور آج ایک بجے گلبرگ میں ہونے والی مشترکہ پریس کانفرنس میں عوامی رکشہ یونین کی نمائندگی سابق چیئرمین مجید غوری کریں گے۔جس میں عوامی رکشہ یونین کے آئندہ لائحہ عمل کے حوالے سے بھی اعلان کریں گے۔

مزید : میٹروپولیٹن 1


loading...