اے اللہ دنیا میں دین اسلام کی ہوائیں چلادے ،حاجی عبدالوہاب ،رقت آمیز دعا کیساتھ تبلیغی اجتماع کا پہلا مرحلہ مکمل

اے اللہ دنیا میں دین اسلام کی ہوائیں چلادے ،حاجی عبدالوہاب ،رقت آمیز دعا ...

 رائے ونڈ (نمائندہ پاکستان)رائے ونڈ عالمی تبلیغی اجتماع کاپہلامرحلہ اجتماعی رقت آمیز دعا کے ساتھ اختتام پذیر ہو گیا ،ا ختتامی دعا میں تقریبا چھ لاکھ افراد نے شرکت کی ،دعا سے قبل امیر جماعت حاجی عبدالوہاب نے پنڈال میں بیٹھے ہوئے لوگوں کو ہدایات بھی جاری کیں ۔تفصیلات کے مطابق 66 واں سالانہ سہ روزہ بین الاقوامی تبلیغی جوڑ کاپہلا مرحلہ امیر جماعت حاجی عبدالوہاب کی دعا کے ساتھ ختم ہو گیا،اجتماعی دعا 10 بجے شروع ہوئی دعا کا دورانیہ 30منٹ تک جاری ر ہا ،دعا میں ملکی اور غیر ملکی لاکھوں دین کی شمع کے پر وانوں نے شرکت کی ،رقت آمیز دعا میں نوجوانوں،بوڑھوں ،بچوں اور خواتین کی کثیر تعداد نے بھی شرکت کی ،دعا کے وقت ہر آنکھ اشکبار تھی اور اپنی نیک دلی خوہشات کی تکمیل کے لئے اللہ کے حضور ہر شخص گڑ گڑا کراس کی رحمت کا طلب گار تھا،اختتامی اجتماعی دعا کے چند کلمات یہ ہیں ۔اے اللہ دنیا میں دین کی ہوائیں چلا دے ،اے اللہ ہماری خطاؤں اور سیاہ کا ر یو ں کو معاف فرمادے ،اے اللہ تو ہمارا بن جا اور ہمیں اپنا بنا لے ،اے اللہ ہمارے گناہوں اور بدا عمالیوں پر در گزر فرما دے ،اے اللہ دنیا میں اسلام کا بول بالافرما دے ،اے اللہ ہمیں تیرے نبی ﷺ کی سنتوں کو زندہ کرنے والا بنادے ،اے اللہ ہمیں دین پر چلنے کی توفیق عطا فر مادے ،اے اللہ ہماری دعاؤں کو قبول فرما دے ، اے اللہ عالم اسلام کے دلوں کو جوڑدے، اجتماعی دعا سے پہلے حاجی عبدالوہاب نے پنڈال میں بیٹھے ہوئے ہجوم کو ہدایات جاری کیں ،ہدایات کے دوران انہوں نے پنڈال میں بیٹھے ہو ئے لوگوں کو اپنی زندگی اللہ اور اس کے رسول ﷺ کے بتائے ہو ے طر یقو ں پر گزارنے پر تلقین کرتے ہوئے کہا دعوت و تبلیغ کے عمل سے پوری دنیا میں غلبہ اسلام ہوگا ،اخلاق سے دین الٰہی کو بنی نوع انسان تک پہنچانا ہر مسلمان کی ذمہ داری ہے ،عملوں کا دارو مدار نیتوں پر ہے ،نیت ٹھیک ہوجائے تو امن کی فضاء پیدا ہوسکتی ہے اللہ تعالیٰ پر توکل کمزور ہورہا ہے اللہ کا پسندیدہ دین اسلام ہے اور اس پر عمل کرنے والوں اور دین کی سمجھ رکھنے والوں کی یہ ذمہ داری ہے کہ وہ اللہ تعالیٰ کے احکامات اور نبی اکرم ﷺکے طریقوں کو پوری انسانیت تک پہنچائیں، اللہ تعالیٰ نے تبلیغ دین کیلئے ایک لاکھ چوبیس ہزار سے زائد انبیائے کرام کو معبوث فرمایا اور انہوں نے دعوت کے کام کو اپنا کام سمجھ کر کیا ،نبی آخرزمان حضرت محمد رسول اللہ ﷺ اور صحابہ کرام رضوان اللہ اجمٰعین کی جماعت نے اللہ کے دین کو ہر خاص و عام تک پہنچانے کیلئے محنت کی اور قربانیوں کی عظیم داستانیں رقم کیں ،حضور اکرم ؐ چونکہ آخری نبی ہیں اب دعوت کا یہ عظیم کام امت کے ذمے ہے ،جو مسلمان دین محمدی کی آبیاری کیلئے کام کررہے ہیں وہ دنیا اور آخرت میں کامیابیوں سے ہمکنار ہوں گے اور جو مسلمان دنیا کی آسائشوں اور رنگینیوں میں گم ہوکر تبلیغ کے مشن کو اپنانے سے گریز کررہے ہیں انہیں دعوت کے کام پر لگانا ہمار ے فرائض میں شامل ہے تاکہ انسانیت ہدایت کے راستے پر چل نکلے اور ان کے مقدر سے محرومیاں ختم ہوجائیں ، اللہ اپنی ذات کے اعتبارسے یکتا ہے یہی ایمان کامل ہے اللہ کا دین دل میں اتارنے کانام ایمان ہے انسان ما ں کے پیٹ سے آیا ہے قبر کے پیٹ کی طرف دوڑتا چلا جارہا ہے نجا ت کا حل توبہ اور اللہ کے دین کی رسی کو مضبوطی سے تھام لینے میں ہے ، تبلیغی اجتماع دین سیکھنے کی تربیت گاہ دنیا فانی بلکہ ایک امتحان گاہ ہے اللہ اور اسکے رسول ﷺ کے بتائے ہوئے راستوں پر چلنا ہی نجات ہے جہنم کی آگ دنیا کی آگ سے کئی ہزار گنا زیادہ آتشی ہوگی اورکھولتا ہوا پانی اس قدر خوف ناک ہو گا کہ انسان کے اندر جاتے ہی گوشت ہڈیوں سے علیحد ہ ہوجائے گا خدا کے قہر سے ڈرو اور گناہوں سے توبہ کرکے سچے مسلمان بنو اور دوسروں کو بھی بنا ؤ یہی خداکو پسند ہے گلی کوچوں میں نکل کراپنے بھائیوں کو دین کی دعوت دو ، دعا کے بعد ہزاروں تشکیل شدہ جماعتیں دین اسلام کی تبلیغ کیلئے اندرون اور بیرون ملک روانہ ہو گئیں،جبکہ لا تعداد لوگوں نے دین اسلام کی روشنی پھیلانے کے لئے اپنی زندگیا ں وقف کر دیں،جبکہ سینکڑوں لوگوں نے تبلیغی جماعت کے ساتھ سہ روزہ اور چلہ لگانے کیلئے اپنا نام درج کر وایا ۔

مزید : صفحہ اول


loading...