دو سال بعد علامہ عرفانی شہید کے قاتل گرفتار نہ ہو سکے

دو سال بعد علامہ عرفانی شہید کے قاتل گرفتار نہ ہو سکے

پارا چنار (نمائندہ پاکستان) دو سال پورے ہوئے مگر علامہ عرفانی شہید کے قاتل گرفتار نہیں کئے گئے یہ موجودہ مرکزی حکمران اور ایجنسیوں کے ناکامی کا منہ بولتا ثبوت ہے پاراچنار میں علامہ شہید محمد نواز عرفانی کا دوسری برسی انکے مزار پر عقیدت واخترام کے ساتھ منایا گیا،پاراچنار شہر کے اکثر مارکیٹ بازار بند رہے۔برسی میں پشاور، لاہور،اسلام آباد سمیت ملک دوسرے علاقوں سے عرفانی کے دوست اور احباب نے بھی شرکت کی۔سیکورٹی کے سخت انتظامات کئے گئے تھے کرم ایجنسی پاراچنار کے متغبر عالم دین علامہ محمد نواز عرفانی کو اسلام آباد میں دہشت گردوں نے نومبر2014کو فائرنگ کرکے شہید کر دیا گیا تھا۔برسی کے موقع پر خطاب کرتے ہوئے علامہ فدا حسین مظاہری،علامہ خورشید انور جوادی،علامہ سید جمیل شیرازی،علامہ سید سجاد رضوی، علامہ میرامام،سیکرٹری طوری بنگش اقوام حاجی فقیر حسن اور فرزند شہید عرفانی علی ہادی عرفانی نے کہاکہ دو سال پورے ہوئے مگر علامہ عرفانی شہید کے قاتل گرفتار نہیں کئے گئے یہ موجودہ مرکزی حکمران اور ایجنسیوں کے ناکامی کا منہ بولتا ثبوت ہے مقررین نے کہاکہ آج کے حکمران داخلی اور خارجی ناکام پالیسی کے سبب طالبان،داعش نے ملک میں قتل وغارت کا بازار گرم کر رکھا ہیں۔اور ملک میں اہل تشیع کے خلاف مختلف قسم کے بہانوں سے حکومت نے تنگ کرنا شروع کر دیا ہے۔ انھوں نے کہاکہ قیا م پاکستان کیاسے لیکر آج تک ہم نے خون دیا ہیں اور طوری قبائل ملک کے کونے کونے اور ملک کے سرحدات پر جانوں کے قربانیاں پیش کئے ہیں اور کرتے رہے گے۔ پروگرام کے آخر میں ملک اور افواج پاکستان کیلئے حصوصی دعائیں کئے گئے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...