پیپلز پارٹی ملک کو بحرانوں سے نکال سکتی ہے، سید ظاہر علی شاہ

پیپلز پارٹی ملک کو بحرانوں سے نکال سکتی ہے، سید ظاہر علی شاہ

تخت بھائی(نامہ نگار)پی پی پی کے سابق صوبائی صدر اور سنٹرل ایگزیکٹیو کونسل کے رکن سید ظاہر علی شاہ نے کہا ہے کہ پی پی پی ہی موجودہ وقت میں ملک کو سیاسی بحران سے نکال سکتی ہے۔ سی پیک منصوبے سے مغربی روٹ پر مستفید کرنے کے لیے صوبے کی تمام سیاسی جماعتوں کو متحد ہو کر ایک وکٹ پر کھیلنا ہوگا۔ پی پی پی چھوٹے صوبوں کو اپنے حقوق سے محروم کرنے کی ہر سازش ناکام بنا دیگی، مرکز جلد از جلد نئی مردم شماری اور این ایف سی ایوارڈ کا اعلان کریں اور تمام صوبوں کو ان کی آبادی کے تناسب سے وسائل فراہم کئے جائے۔ وہ تخت بھائی کے علاقے فضل آباد میں سابق وزیر اعظم بے نظیر بھٹو شہید کے افسر بکار خاص اور سینئر قانون دان شوکت علی خان ایڈوکیٹ کے بیٹوں شیراز خان اور قاسم خان کی دعوت ولیمہ کے موقع پر میڈیا سے بات چیت کر رہے تھے۔ اس موقع پر پی پی پی کے صوبائی رہنما ظاہر شاہ طورو، ضلعی رہنما ابراہیم سید یوسفزئی، سید باچہ مہمند، تحصیل کونسلر حاجی اورنگزیب، مجاہد خان، ڈاکٹر سراج اور سابق امیدوار قومی اسمبلی عبد القادر خان ہوتی بھی موجود تھے۔ سید ظاہر علی شاہ نے کہا کہ حکومت اور پی ٹی آئی کے درمیان اقتدار کی جنگ ملک کو معرکہ آرائی کی طرف لے جا رہی ہے۔اب گیند سپریم کورٹ کے پاس ہے جس کے ہر فیصلے کا احترام سب پر لازم ہے ۔انہوں ن ے کہا کہ پی ٹی آئی نے صوبے کے عوام کے مسائل حل کرنے کی بجائے انہیں مایوس کیااور تمام فنڈز خرچ کرنے کی بجائے لیپس ہو گئے۔ پی پی پی ملک کی سب سے بڑی پارٹی ہے اور پارٹی کو دوبارہ اصل مقام پر لانے کے لیے پارٹی چیئرمین بلاول بھٹو زرداری خود میدان میں آگئے ہے۔جو پارٹی کے تمام رہنماؤں کو ایک میز پر اکھٹا کر کے صوبائی و ضلعی سطح پر عہدیداروں کے ناموں کو اعلان کرینگے۔ سی پیک منصوبے کے حوالے سے ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ ہم نے ہمیشہ چھوٹے صوبوں کے حقوق کی آواز اٹھائی ہے وفاق پنجاب کو نوازنے کی بجائے منصوبے کے مغربی روٹ کو بحال کریں جس پر صوبے کے تمام سیاسی جماعتیں متحد ہیں۔اگر وفاق نے ہمارے صوبے سے زیادتی کی کوشش کی تو صوبے کی تمام پارٹیاں مشترکہ لائحہ عمل طے کر کے اس کے خلاف عدالت سے رجوع کریگی۔ انہوں نے مزید کہا کہ وفاق حکومت کو فوری طور پر نئی مردم شماری کرانا ہوگی تاکہ جلد از جلد این ایف سی ایوارڈ کا اجراء کر کے تمام صوبوں کو ان کی آبادی کے تناسب سے فنڈز دیئے جائے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...