عام انتخابا ت سے قبل فاٹا کو کے پی کے میں ضم کیاجائے‘حیدر ہوتی

عام انتخابا ت سے قبل فاٹا کو کے پی کے میں ضم کیاجائے‘حیدر ہوتی

مردان ( بیورورپورٹ) سابق وزیراعلیٰ اوراے این پی کے صوبائی صدر امیرحیدرخان ہوتی ایم این اے نے کہاکہ اقتدار اے این پی کی منزل نہیں ہماری جدوجہد پختون قوم کے حقوق کی حصول کے لئے ہے ،پانامہ لیکس پر کپتان کو ہم شروع دن سے کہتے رہے کہ وہ سپریم کورٹ میں ثبوت دیں، تبدیلی ، میرٹ اور انصاف کے نام پرخیبرپختون خوا کے عوام کو دھوکہ دیاگیا ،فاٹاکو خیبرپختون خوا میں شامل کیاجائے ،سی پیک پختون قوم کے لئے زندگی اور موت کا سوال ہے اور اس سے ہماری آئندہ نسلوں کا مستقبل وابستہ ہے وہ حلقہ پی کے 23کے علاقہ ابراہیم خان کلے میں شمولیتی اجتماع سے خطاب کررہے تھے جس میں پی ٹی آئی کے سعید خان ،قائم شاہ جنرل کونسلرراحت شاہ ،شاہ گل اورایوب خان نے اپنے ساتھیوں سمیت مستعفی ہوکر اے این پی میں شمولیت کا اعلان کیا امیرحیدرخان ہوتی انہیں ٹوپیاں پہنائیں اور مبارک بادی جلسے سے ضلعی جنرل سیکرٹری لطیف الرحمان ،اوردیگر نے بھی خطاب کیا امیرحیدرخان ہوتی نے کہاکہ دھرنے میں لاکھوں افراد کی شرکت کے دعویدار صرف چند ہزار افرادہی اکٹھاکرسکے اورحالات کو دیکھ کر کپتان کو یوٹرن لینا پڑا انہوں نے کہاکہ ہم شروع دن سے کہتے رہے ہیں کہ پانامہ لیکس پر سپریم کورٹ میں ثبوت اور شہادتیں پیش کی جائیں انہوں نے کہاکہ عمران خان ملک میں سیاسی انتشار چاہتے ہیں ان کا ایجنڈا وزیراعظم بننے کا ہے اس لئے اس نے پنجا ب کو سیاسی اکھاڑا بنادیاہے اے این پی کے صوبائی صدر نے کہاکہ افسو س کی بات ہے کہ پختون قوم نے پی ٹی آئی کو مینڈیٹ صوبے کے مسائل کے حل کے لئے دیاتھالیکن یہاں کے عوام کے مینڈیٹ کی توہین کررہے ہیں صوبائی اورمرکزی حکومتوں کو یہاں کے عوام کے مشکلات اور مصائب کا کوئی پرواہ نہیں اورگذشتہ ساڑھے تین سال میں کوئی بھی میگا منصوبہ شروع نہیں کیاگیا امیرحیدرخان ہوتی نے کہاکہ قبائلی عوام کو ان کے حقوق دیے جائیں اور عام انتخابا ت سے قبل فاٹا کو خیبرپختون خوا میں ضم کیاجائے تاکہ قبائلی عوام قومی سیاسی دھارے میں شامل ہوں انہوں نے کہاکہ وزیراعظم سی پیک کے حوالے سے پختون خوا کے عوام سے جو وعدے کئے گئے تھے اس پر مکمل عمل درآمد چاہتے ہیں اوراس پر ایک انچ بھی لچک دینے کو تیا رنہیں کیونکہ پاک چائنا راہداری کے نام پر پنجاب چائنا راہداری ہمیں قطعاً منظورنہیں اس کے خلاف بھرپور مزاحمت کی جائے گی انہوں نے کہاکہ صوبہ مالی ،سیاسی اور انتظامی لحاظ سے مسائل سے دوچارہے ہم نے اقتدار چھوڑتے وقت خزانہ بھرا چھوڑا تھا آج خزانہ گنگال ہے ترقیاتی منصوبوں کے پیسے کاٹے جارہے ہیں تبدیلی کے نام پر مزید پختونوں کو دھوکہ نہیں دیاجاسکتا 2018اے این پی کاسا ل ہوگا انہوں نے مزید کہاکہ کہ وقت آگیاہے کہ پختون سرخ جھنڈے تلے اکٹھے ہوں اس وقت پختون گوناگو مسائل سے دوچارہیں باچاخان کے پیروکا رہی اس صوبے اور پختونوں کو مسائل اور مصائب سے نکال سکتے ہیں ۔

شیر گڑھ ( نامہ نگار) عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی صدر اور سابق وزیر اعلیٰ امیر حیدر خان ہوتی نے کہا ہے کہ حالیہ ناکام احتجاج نے پی ٹی آئی اور عمران کی مقبولیت کا پول کھول دیا ہے پی ٹی آئی نے پختونوں کو نا قابل تلافی نقصان پہنچا یا ہے نوز شریف اور عمران خان دونوں نے پختون خواہ کے خون سے پنجاب کے فصلوں کو سیراب کیا ہے اگر عمران خان اور پرویز خٹک یہ احتجاج پختونوں کے حقوق اور سی پیک پر کرتے تو ہم مانتے لیکن انکا یہ احتجاج تو اسلام آباد کی کرسی پر تھا جسے پنجا ب نے ناکام بنا دیا ان خیالات کا اظہار انہوں نے غریب آباد (فضل آباد ) میں مختیار خان کے اقامت گاہ پر ایک بڑے شمولیتی جلسہ سے خطاب کرتے ہوئے کیا اس موقع پر غریب آباد اور باجوڑو کلی کے درجنوں افراد نے عمران شہید گروپ سے مسعفی ہو کر اے این پی میں شمولیت کا اعلان کیا اس موقع پر ضلعی جنرل سیکرٹری حاجی لطیف الرحمان سابق صدر فاروق خان نے بھی خطاب کیا جبکہ ضلعی کونسلر جواد ٹکر تحصیل کونسلر ذولفقار علی بھٹو حاجی حلیم این وائی او کے ضلعی راہنما محمد رفیع فرحان ٹکر اور فاروق سید بھی موجود تھے حیدر خان نے کہا کہپاکستان اس وقت تک ترقی کے راستے پر گامزن نہیں ہو سکتا جب تک تمام صوبوں کو اپنے وسائل پراختیار نہ دیا جائے گافاٹا کو فوری طور پر خیبر پختو نخوا میں ضم کیا جائے تاکہ قبائل بھی ترقی کے دھارے میں شامل ہو جائے مردم شماری وقت کی اشد ضرورت ہیں کیونکہ ان کے بغیر این ایف سی ایوارڈ ،صوبائی خود مختاری نامکمل ہیں پاک چائنا اقتصادی روٹ بناتے وقت مغربی روٹ کو مہاہدے کے مطابق پہلے تعمیر کیا جائے ورنہ یہ خیبر پختونخوا کے خلاف ایک سازش ہو گا دھشت گردں کو کنٹرول کرنے کے لیے نیشنل ایکشن پلان پر عن ومن عمل درامد کیا جائے مرکزی حکومت خیبر پختو نخوا سے سوتیلی ماں جیسا رویہ ترک کریں ورنہ نتائج خطرناک ہو نگے پی ٹی آئی صوبے میں ترقی کا پہیہ روکا ہوا ہے تبدیلی کے اثرات منظر عام پر ارہے ہیں ترقیاتی فنڈز مسلسل لپس ہو تے ہیں عمران خان وزارت عظمیٰ کے لیے خیبر پختو نخوا کو قربان کرنے پر تلے ہوئے ہیں جس سے پختون قوم متاثر ہو رہا ہے عوامی نیشنل پارٹی کسی غیر جمہوری طریقے سے حکومت مخالف تحریک کا حصہ نہیں بنے گا پختون قوم اب بیدار ہو چکا ہے اور کوئی مائی کا لال اب ان کو دھوکہ نہیں دے سکتے آنے والا دور ایک بار پھر عوامی نیشنل پارٹی کا ہے اور یہی وجہ ہے کہ پورے پختو نخوا میں لوگ دھڑا دھڑ شامل ہو رہے ہیں اانہوں نے کہا کہ مرکزی اور صوبائی حکومت کی اختلافات کی وجہ سے خیبر پختو نخوا کے عوام بری طرح متاثر ہو رہے ہیں تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان وزیر اعظم کی کرسی کے پیچھے بھاگ رہے ہیں جب کہ نوازشریف کرسی بچانے کی چکر میں لگے ہوئے ہیں انہوں نے کہا کہ گذشتہ تین سالوں تحریک انصاف کے کارکن بھنگڑوں اور ڈانس سے فارغ نہیں ہو سکے انہوں نے کہا کہ پاکستان تحریک انصاف کی حکومت مکمل طور پر ناکام ہو چکی ہے اور صوبے میں ترقیاتی کام بند کئے گئے ہیں صوبے میں دو حکومتیں قائم ہیں ایک بنی گالہ کی اور دوسری پرویز خٹک کی وزیر اعلیٰ کو بنی گالہ سے کنٹرول کیا جاتا ہے اور ہمارے صوبائی حکومت ان کے اشاروں پر ناچتی ہے انہوں نے کہا کہ ہمارے صوبے کے وسائل کو دھرنوں پر خرچ کئیا جارہا ہے وزرا بے اختیار ہیں اور صوبہ کو جھانگیر ترین کے حوالہ کیا گیا ہے انہوں نے کہا عوامی نیشنل پارٹی نے اپنے دور حکومت میں صوبہ خیبر پختو نخوا کو ترقی کے راہ پر گامزن کیا تھا اور دھشت گردی کے باوجود پورے صوبے میں ترقیاتی کام زور و شور سے جاری تھے اور صوبے میں اپوزیشن کا لفظ ختم کیا تھا تمام ممبران کو یکساں فنڈز مل جاتا تھا اپنے دور اقتدار میں کسی سے زیادتی نہیں کی انہوں نے کہا کہ پختون قوم اب بیدار ہو چکا ہے اور اب کوئی بھی ان کو اسلام یا تبدیلی کے نام پر گمراہ نہیں کر سکتے انہوں نے کہا کہ اسلام کے نام پر ووٹ لینے والوں سے قوم زرا پوچھ لیں کہ انہوں نے اسلام کی کیا خدمت کی اسلام کی بجائے ان کی نظریں اسلام اباد پر لگی ہو تی ہیں انہوں نے کہا کہ مرکزی حکومت نے صوبائی حکومت سے جاری اختلافات کی وجہ جو قومی منصوبے جاری ہیں ان میں خیبر پختو نخوا کو نظر انداز کر رہے جو کہ نا قابل معافی ہیں انہوں نے کہا کہ سی پیک پنجاب کی ترقی اور خوشحالی کا منصوبہ بنا دیا گیا ہے پختونوں کے حقوق کو نظر انداز کردیا گیا ہے اگر سی پیک پر پختونون خواہ کو نظر انداز کیا گیا تو پختون قوم اس کے لیے کسی بھی قربانی سے دریغ نہیں کریں

مزید : پشاورصفحہ اول


loading...