”لندن جائداد کی خریداری کیلئے پیسہ پاکستان سے نہیں گیا“ شریف فیملی کے وکیل کے موقف پر نئی بحث چھڑ گئی

”لندن جائداد کی خریداری کیلئے پیسہ پاکستان سے نہیں گیا“ شریف فیملی کے وکیل ...
”لندن جائداد کی خریداری کیلئے پیسہ پاکستان سے نہیں گیا“ شریف فیملی کے وکیل کے موقف پر نئی بحث چھڑ گئی

  


اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) سپریم کورٹ آف پاکستان میں پاناما کیس کی سماعت کے دوران شریف فیملی کے وکیل سلمان اسلم بٹ نے عدالت کو بتایا کہ لندن میں جائیداد نیسکول اور لیکسن نامی آف شور کمپنیوں کی ملکیت ہیں، وزیراعظم نوازشریف اور مریم نواز کا ان سے کوئی علق نہیں، جائیداد کی خریداری کے لئے پیسہ بھی پاکستان سے نہیں بھجوایا گیا۔ جس پر عدالت نے استفسار کیا کہ کیا جائیداد کی ملکیتی دستاویزات مالکان کے پاس ہیں؟ابھی تک عدالت میں جمع کیوں نہیں کرائی گئیں؟

مزید پڑھیں :یہ پک اینڈ چوز والا معاملہ نہیں، بدعنوانی کرنے والے سب زد میں آئیں گے، فیصلہ بھی قانون کے مطابق ہوگا، چیف جسٹس

جسٹس آصف کھوسہ نے ریمارکس دیئے کہ جب تک عدالت کو مطمئن نہیں کیا جاتا،کلین چٹ نہیں دیں گے، حسین نواز عدالت میں آئیں اور مطمئن کریں، کیس بہت سادہ ہے لیکن مطمئن نہ کیا گیا تو کسی اور ہی طرف جائے گا۔چیف جسٹس انور ظہیر جمالی نے کہا کہ دوسرا راستہ یہ ہے کہ فریقین تحقیقاتی کمیشن کے سامنے دستاویزات پیش کریں لیکن وہاں مہلت نہیں ملے گی۔

مزید : قومی /اہم خبریں


loading...