حکومت اور دھرنے والے ضد چھوڑ کر درمیانہ راستہ اختیار کریں،اشرف جلالی

حکومت اور دھرنے والے ضد چھوڑ کر درمیانہ راستہ اختیار کریں،اشرف جلالی

  



لاہور (نمائندہ خصوصی)تحریک لبیک یا رسول اللہ ؐکے سربراہ ڈاکٹر محمد اشرف آصف جلالی نے کہاہے کہ ملک کی غالب اکثریت کا مطالبہ ہے کہ حکومت اور دھرنے والے اپنی اپنی ضد چھوڑ کر درمیانہ راستہ اختیار کریں۔ وہ درمیانہ راستہ ملک کی خاموش اکثریت کا مطالبہ بھی ہے اور اس میں ملک و قوم کی بھلائی بھی ہے۔ چنانچہ حکومت اپنی پالیسی بدل کر اور اہل دھرنا اپنا مطالبہ بدل کر مقبوضہ کشمیر کی آزادی کے لیے عملی جہاد کے معاہدے پر اتفاق کر لیں۔ اس میں اگرچہ حکومت اور اہل دھرنا کے ذاتی مفادات کو تو ٹھیس پہنچے گی مگر یہ فیصلہ پاکستان کے استحکام کے لیے سنگ میل ثابت ہوگا۔

بھارت مقبوضہ کشمیر ہڑپ کرنے کے بعد آزاد کشمیر کی طرف مسلسل پیش قدمی کر رہا ہے۔ حکمران اور فضل الرحمٰن کبوتر کی طرح اس سے آنکھیں بند کر کے دھرنا کھیل میں مصروف ہیں۔ فریقین یہ کیوں نہیں سوچ رہے کہ مقبوضہ کشمیر کی ریاستی حیثیت ختم کرنے کے بعد اب بھارت نے یو این او کی قردادوں کی دھجیاں اڑاتے ہوئے جموں کشمیر،لداخ،آزاد کشمیر اور گلگت بلتستان کا اپنی مرضی کا نقشہ شائع کر دیا ہے۔ 8برس تک کشمیر کمیٹی کے چیئر مین کی حیثیت سے مفادات ہڑپ کرنے والے ملا فضل الرحمٰن کے لیے اب کفارہ ادا کرنے کا وقت ہے۔

جلالی

مزید : میٹروپولیٹن 4